Wednesday , October 18 2017
Home / شہر کی خبریں / بہارکے نتائج‘ وعدوں سے انحراف کرنے والوں کیلئے سبق : زاہد علی خان

بہارکے نتائج‘ وعدوں سے انحراف کرنے والوں کیلئے سبق : زاہد علی خان

ف12فیصد تحفظات کی فراہمی کیلئے فوری بی سی کمیشن کے قیام پر زور ‘ حصول انصاف تک ’سیاست‘ کی جدوجہد جاری رہے گی ‘ نلگنڈہ میں جلسہ عام سے خطاب

نلگنڈہ ۔ 9نومبر ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز)  ایڈیٹر روزنامہ ’’سیاست‘‘ جناب زاہد علی خان نے کہا کہ وہ نلگنڈہ میں خطاب کررہے ہیں مگر ان کی آواز ورنگل تک ’سیاست‘‘ کے ذریعہ پہنچتی ہے ۔ بہار کے نتائج وعدوں سے انحراف کرنے والوں کیلئے سبق ہے ۔ ٹی آر ایس حکومت مسلمانوں کو 12فیصد مسلم تحفظات فراہم کرنے کیلئے سنجیدہ ہے تو سدھیر کمیٹی پر وقت برباد کرنے کے بجائے بی سی کمیشن تشکیل دیتے ہوئے اپنے وعدے کو پورا کریں ۔ حصول انصاف تک روزنامہ ’’سیاست‘‘ کی جدوجہد جاری رہے گی اور  تحریک کو مسلمانوں کی بھرپور تائید پر اظہار تشکر کیا ۔ نلگنڈہ کے ایس آر فنکشن ہال میں روزنامہ  سیاست اور اقامت خانہ بہادر خان کے زیراہتمام منعقدہ 12 فیصد مسلم تحفظات کے جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے ان خیالات کا اظہار کیا ۔ جناب زاہد علی خان نے کہا کہ ٹی آر ایس نے اپنے انتخابی منشور میں مسلمانوں کو 12فیصد تحفظات فراہم کرنے کا وعدہ کیا ‘ مسلمانوں نے بھروسہ کیا مگر اس پر کوئی عمل آوری نہیں ہوئی ۔ روزنامہ سیاست نے ایک سال تک انتظار کیا کہ چیف منسٹر تلنگانہ اپنے وعدے کو نبھائیں گے مگر جب بی سی کمیشن کے بجائے حکومت کی جانب سے سدھیر کمیٹی تشکیل دی گئی تب روزنامہ سیاست نے تلنگانہ کے تمام اضلاع سے سرکاری ملازمین اور عوامی منتخبہ نمائندوں کے ذریعہ جمہوری انداز میں حکومت کو نمائندگیاں پیش کرنے کا فیصلہ کیا ۔ تحفظات سے نیوز ایڈیٹر عامر علی خان یا ان کے بچوں کو کوئی فائدہ نہیں ہوگا باوجود اس کے ملت کے مفادات کو پیش نظر رکھتے ہوئے انہیں مسلمانوں میں شعور بیدار کرانے کیلئے تمام اضلاع کو روانہ کیا جارہا ہے ۔ وہ مسلمانوں سے بھی اظہار تشکر کرتے ہیں کہ تمام جماعتوں ‘ تنظیموں کی جانب سے روزنامہ سیاست کی جانب سے شروع کی گئی تحریک کو مستحکم کرنے میں مکمل تعاون کررہے ہیں ۔ جناب زاہد علی خان نے کہا کہ چیف منسٹر تلنگانہ کے سی آر نے 4ماہ میں مسلمانوں کو 12فیصد تحفظات فراہم کرنے کا وعدہ کیا تھا ‘ اقتدار کے 17ماہ  مکمل ہوچکے ہیں  اور تلنگانہ میں ایک لاکھ 60ہزار جائیدادوں پر تقررات کرنے کا اعلان کیا گیا ہے ۔ اگر مسلمانوں کو 12فیصد تحفظات فراہم کئے بغیر تقررات کے عمل کو پورا کیا جاتا ہے تو مسلمانوں کو سرکاری تقررات میں 15ہزار ملازمتوں کا نقصان ہوگا اور تعلیمی میدان میں بھی بڑے پیمانے پر مسلم طلبہ کو اعلیٰ تعلیم سے محروم ہونا پڑے گا ۔ جناب زاہد علی خان نے کہا کہ یہ تحریک کسی کی تائید میں نہیں ہے اور نہ ہی کسی کی مخالفت میں‘ صرف مسلمانوں کو ان کے حقوق فراہم کرنے کی یاد دہانی کیلئے چلائی جارہی ہے ۔ وعدوں سے انحراف کرنے یا انہیں دھوکہ دینے والوں کو عوام کبھی معاف نہیں کریں گے ۔ نریندر مودی نے ملک کے عوام سے بہت سارے وعدے کئے یہاں تک کہ انتخابات سے عین قبل بہار کیلئے ایک لاکھ 25ہزار کروڑ کے پیاکیج کا اعلان کیا مگر بہار کے عوام نے مودی اور پیکیج دونوں کو نظرانداز کردیا ۔ ورنگل میں لوک سبھا کا ضمنی چناؤ منعقد ہورہا ہے ‘ وہ نلگنڈہ میں خطاب کررہے ہیں مگر ان کی آواز اخبار سیاست کے ذریعہ ورنگل تک بھی پہنچے  گی ۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ تحریک میں روزنامہ سیاست کا رول ناقابل فراموش ہے ۔ تلنگانہ میں مسلمانان تلنگانہ تحریک کا حصہ نہ ہونے اور مجلس کی جانب سے علحدہ تلنگانہ کی مخالفت کرنے کی انٹیلیجنس کی جانب سے مرکز کو رپورٹ پہنچی تو انہوں نے مسلمانان تلنگانہ کو تلنگانہ کا غدار کا لیبل لگانے سے بچانے کیلئے وہ خود تلنگانہ کی تحریک میں کود پڑے ۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ کے مسلمان تعلیمی ‘ معاشی ‘ سماجی طور پر پسماندہ ہے ‘ انہیں دیگر ابنائے وطن کے کندھے سے کندھا ملاکر چلانے کیلئے تعلیم اور ملازمتوں میں تحفظات دینا وقت کا تقاضہ ہے ۔ مسلمانوں نے ملک میں صدیوں راج کیا ہے ‘ ہمیں ماضی کی خوش فہمی میں مبتلا ہونے کے بجائے مستقبل کی حکمت عملی تیار کرنا چاہیئے تاکہ اپنے بچوں کا مستقبل روشن ہوسکے ۔ انہوں نے مسلم لڑکیوں میں حصول تعلیم کیلئے پائی جانے والی جستجو کی ستائش کرتے ہوئے روزنامہ سیاست کی جانب سے ملت کی فلاح و بہبود کیلئے انجام دیئے جانے والے مختلف فلاحی کاموں پر تفصیلی روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ روزنامہ ’’سیاست‘‘ مسلمانوں کے مسائل پر کبھی کوئی سمجھوتہ نہیں کرے گا ‘ حقوق کے حصول کیلئے اپنی جدوجہد جاری رکھے گا ۔

TOPPOPULARRECENT