Monday , October 23 2017
Home / سیاسیات / بہار اسمبلی انتخابات میں 7 کروڑ رائے دہندے

بہار اسمبلی انتخابات میں 7 کروڑ رائے دہندے

دونوں حریفوں کو کامیابی کا یقین، بی جے پی کی شکست یقینی ، اوپنین پول کا نتیجہ
پٹنہ ۔ 9 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) ایک تخمینہ کے مطابق 5 مرحلوں پر مشتمل بہاراسمبلی انتخابات میں جس کے پروگرام کا اعلان آج الیکشن کمیشن نے کیا ہے، تقریباً 7 کروڑ رائے دہندے اپنے حق رائے دہی سے استفادہ کریں گے۔ بہار چیف الیکٹورل آفیسر اجئے وی نائک نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے اس کا انکشاف کیا۔ مرکزی پولیس تمام پولیس اسٹیشنوں پر تیعنات کی جائے گی اور آزادانہ، منصفانہ اور پرامن انتخابات کو یقینی بنایا جائے گا۔ 30 اضلاع میں برقی رائے دہی مشینیں استعمال کی جائیں گی۔ پیسے کے استعمال کو روکنے کیلئے اقدامات کا منصوبہ بنایا جارہا ہے۔ مثالی ضابطہ اخلاق اعلان کے ساتھ ہی نافذ ہوچکا ہے۔ نئی دہلی سے موصولہ اطلاع کے بموجب 13 اسمبلی انتخبات کیلئے تیاری کرتے ہوئے جنتادل(یو) ۔ آر جے ڈی ۔ کانگریس اتحاد اور بی جے پی زیرقیادت اتحاد دونوں نے اعتماد ظاہر کیا کہ وہی ریاستی انتخابات میں کامیاب رہیں گے۔ بی جے پی کے ترجمان شاہنواز حسین نے کہاکہ الیکشن کمیشن انفرادی پروگرام کا اعلان کرچکا ہے اور بھگوا پارٹی یقینی طور پر برسراقتدار آئے گی۔ انہوں نے کہا کہ ہم رات دن کام میں مصروف ہیں اور عوام بھی اس کا احساس ہے۔ جنتادل (یو) کے صدر شردیادو نے کہا کہ ہمیں بھرپور اعتماد ہے کہ عظیم سیکولر اتحاد، زبردست اکثریت سے کامیاب رہے گا۔ انتخابی نتائج ملک کی آئندہ سمت کا تعین کردیں گے۔ کانگریس کے جنرل سکریٹری سی پی جوشی نے الیکشن کمیشن کے اعلان کا خیرمقدم کیا اور کہا کہ یہ ’’ہوا بازی وزیراعظم اور کامکازی (باصلاحیت) چیف منسٹر کے درمیان مقابلہ ہے۔ مرکزی وزیر روی شنکر پرساد (بی جے پی)، نے کہا کہ بی جے پی کو خوشی ہیکہ دیوالی سے پہلے نتائج کا اعلان ہوجائے گا اور ریاستی حکومت اچھی حکمرانی کے وعدے کے ساتھ دیوالی کی خواشیاں مناسکیں گے۔ ایک اوپینین پول کے نتائج کے بموجب جے ڈی (یو)۔ آر جے ڈی۔ کانگریس امکان ہیکہ 16 سے 132 نشستوں پر حاصل کریں گے جبکہ بہار اسمبلی میں 243 نشستیں ہیں۔ بی جے پی زیرقیادت اتحاد جس میں ایل جے پی، آر ایل ایس پی اور ایچ اے این شامل ہیں۔ سروے کے نتائج کے بموجب 94 تا 110 نشستیں حاصل کرسکے گا۔ رائے دہندوں نے کہا کہ یہ نتائج من مانے سوالات کرکے اخذ کئے گئے نتائج پر مبنی ہیں۔ مبینہ طور پر  10683 افراد سے اگست کے آخری ہفتہ اور ستمبر کے پہلے ہفتہ میں انٹرویو لیئے گئے تھے۔ اس اوپینین پول کے نتائج میں 5 فیصد کمی یا بیشی کا امکان ہے۔ 2010ء کے اسمبلی انتخابات میں جے ڈی یو اور بی جے پی نے 206 نشستیں حاصل کی تھیں جبکہ دونوں پارٹیوں میں اتحاد تھا۔ لالو پرساد زیرقیادت اتحاد میں رام ولاس پاسوان شامل تھے جو صرف 25 نشستیں حاصل کرچکا تھا لیکن 2014ء کے پارلیمانی انتخابات میں این ڈی اے نے مودی لہر کے بل پر 53 فیصد ووٹ حاصل کئے تھے۔

TOPPOPULARRECENT