Saturday , September 23 2017
Home / Top Stories / بہار اسمبلی انتخابات کا 12 اکٹوبر سے آغاز

بہار اسمبلی انتخابات کا 12 اکٹوبر سے آغاز

NEW DELHI, SEP 9 (UNI):-Chief Election Commissioner Nasim Zaidi flanked by Election Commissioners A K Joti (L) and O P Rawat (R) announcing the schedule for the Election to the Legislative Assembly of Bihar, in New Delhi on Wednesday. UNI PHOTO-30U

۔5 مرحلوں میں رائے دہی، چیف الیکشن کمشنر نسیم زیدی کا اعلان

نئی دہلی ۔ 9 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) بہار اسمبلی انتخابات کا 12 اکٹوبر سے آغاز ہوگا۔ 5 مرحلوں میں منعقد ہونے والی رائے دہی 5 نومبر کو ختم ہوگی۔ یہ انتخابات وزیراعظم نریندر مودی کی زیرقیادت این ڈی اے حکومت کی سب سے بڑی مقبولیت کیلئے کڑی آزمائش ثابت ہوں گے۔ چیف منسٹر نتیش کمار اور ان کے آر جے ڈی اور کانگریس سیکولر اتحاد کیلئے بھی یہ انتخابات ریفرینڈم ثابت ہوسکتے ہیں۔ انتخابی شیڈول کا اعلان کرتے ہوئے الیکشن کمیشن نے کہا کہ ووٹوں کی گنتی 8 نومبر کو ہوگی۔ دیوالی سے صرف 3 دن قبل نتائج کا اعلان کیا جائے گا۔ مقامی سطح پر یہ دن غیرمعمولی چھات پوجا کا ہوگا جو بہار میں روشنیوں کا تہوار نظر آتا ہے۔ چیف الیکشن کمشنر نسیم زیدی نے کہا کہ 243 رکنی اسمبلی کیلئے رائے دہی 12 اکٹوبر، 16 اکٹوبر ، 28 اکٹوبر، یکم ؍ نومبر اور 5 نومبر کو ہوگی۔ موجودہ اسمبلی کی مدت 29 نومبر کو ختم ہورہی ہے۔ بہار میں اقتدار کیلئے یہ لڑائی مرکز کی مودی زیرقیادت این ڈی اے حکومت کیلئے اہمیت کی حامل ہے۔ اس سال کے اوائل میں دہلی اسمبلی انتخابات میں بی جے پی کی ناکامی کے بعد بہار اسمبلی کے انتخابات ہورہے ہیں۔ حال ہی میں وزیراعظم نریندر مودی نے بہار کیلئے 1.65 لاکھ کروڑ کے مالیاتی پیاکیج کا اعلان کیا ہے۔ وہ لالو پرساد یادو اور نتیش کمار کے سیکولر اتحاد کے علاوہ نتیش کمار کی دو دہوں پرانی حکومت کو ختم کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔ بی جے پی اور حکمراں جنتادل (یو) کے درمیان اتحاد 8 سالہ اقتدار کے بعد اس وقت ختم ہوا تھا

جب نتیش کمار نے 2013ء کے لوک سبھا انتخابات میں نریندر مودی کو بی جے پی کے انتخابی مہم جو کی حیثیت سے نامزد کرنے پر اس اتحاد سے علحدگی اختیار کی تھی۔ اس رائے دہی کے لئے دسہرہ، عید، محرم، دیوالی اور چھات پوجا تہوار جیسے اہم تہواروں کو مدنظر رکھتے ہوئے چیف الیکشن کمشنر نسیم زیدی نے کہا کہ رائے دہی کے دوران کمیشن کی جانب سے فرقہ وارانہ ہم آہنگی اور امن کو یقینی بنایا جائے گا۔ الیکشن کمشنران اچل کمار جودی اور اوم پرکاش راوت کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے نسیم زیدی نے کہا کہ پرامن رائے دہی کیلئے سیکوریٹی کے وسیع تر انتظامات کئے جائیں گے۔ ریاست میں آزادانہ اور منصفانہ انتخابات کروائے جائیں گے جہاں بائیں بازو انتہاء پسندی سے متاثرہ 47 حلقے اہمیت کے حامل ہیں۔ اس مرتبہ الیکشن کمیشن نے مرکزی مسلح پولیس فورس کے علاوہ ریاست کے 62779 پولنگ اسٹیشنوں سے وابستہ جوانوں کو بھی تعینات کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ریاست میں 6.68 کروڑ رائے دہندے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT