Friday , September 22 2017
Home / سیاسیات / بہار اسمبلی میں مسلسل چوتھے روز اپوزیشن کا ہنگامہ

بہار اسمبلی میں مسلسل چوتھے روز اپوزیشن کا ہنگامہ

پٹنہ، 24 اگست (سیاست ڈاٹ کام) بہار اسمبلی میں اپوزیشن جماعتوں کا ہنگامہ آج چوتھے دن بھی جاری رہا جس کی وجہ سے وقفے سے قبل کوئی بھی کام نہیں ہو سکا۔ اسمبلی کی کارروائی شروع ہوتے ہوئے راشٹریہ جنتا دل (آر جے ڈی) کے عبدالباری صدیقی نے ریاست میں سیلاب کی تباہی کے معاملے کو اٹھا تے ہوئے کہا کہ ریاست میں 19 اضلاع کے ایک کروڑ سے زیادہ لوگ سیلاب سے متاثر ہیں۔ ریاستی حکومت متاثرہ لوگوں کو امداد فراہم کرنے میں مکمل طور پر ناکام ثابت ہو رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس حساس مسئلے پر ایوان میں فوری طور پر بحث ہونی چاہئے تاکہ اس سلسلے میں ان کی تحریک التواء کی تجویز کو منظور کیا جائے ۔ اس پر ایوان کے اسپیکر وجے کمار چودھری نے کہا کہ تحریک التواء کی تجویز ضابطہ کے مطابق نہیں ہے جس کی وجہ سے اسے نامنظور کیا جاتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ سیلاب کے مسئلے پر ضابطہ 43 کے تحت بحث کی جاسکتی ہے ۔ وقفے کے بعد اس معاملے پر کارروائی کمیٹی کی میٹنگ میں غور کر کے فیصلہ کیا جا سکتا ہے ۔ عبدالباری صدیقی سمیت اپوزیشن رہنماؤں نے فوری ایوان میں سیلاب پر بحث کرنے اپنے مطالبے پر ثابت قدم رہے ۔ اس پر نائب وزیر اعلی سشیل کمار مودی نے کہا کہ ریاست کے لوگ ایک طرف سیلاب کی تباہی جھیل رہے ہیں، وہیں دوسری طرف لالو پرساد یادو متاثرین کی مدد کرنے کی بجائے سیاسی ریلی کرنے میں لگے ہیں۔ یادو بہار کے عوام کے بارے میں فکر مند نہیں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کل ہی انہوں نے یادو کو ریلی منسوخ کرنے کا مشورہ دیا تھا تاکہ وہ بھیڑ نہیں جٹنے کی وجہ سے ہونے والی خفت سے بچ سکیں۔اس پر کچھ دیر تک بی جے پی اور آر جے ڈی کے اراکین کے درمیان نونک جھونک ہوتی رہی۔ آر جے ڈی کے عبدالباری صدیقی نے کہا کہ آپ لوگوں کو جو کرنا ہو کر لیجئے لیکن آر جے ڈی کی ریلی 27 اگست کو ہونی ہے اور ضرور ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ سیلاب کا مسئلہ بہت سنگین ہے لہذا تمام درج فہرست کاموں کو فوری طورپر روک کر اس معاملے پر ایوان میں بحث ہونی چاہئے اور ایسا پہلے بھی ہو چکا ہے ۔آر جے ڈی سمیت حزب اختلاف کے دیگر ارکان نے ایوان کے وسط میں نعرے بازی کرنے لگے ۔ ایوان میں کچھ دیر تک ہنگامہ ہوتا رہا اور اس کے بعد اسپیکر نے ایوان کی کارروائی دو بجے دن تک کے لئے ملتوی کر دی۔ اس وجہ سے آج ایوان میں وقفہ سوالات ، وقفہ صفر اور وقفہ ترجیحی کارروائی نہیں ہوسکے ۔

TOPPOPULARRECENT