Saturday , September 23 2017
Home / Top Stories / بہار اسمبلی کا مانسون اجلاس ، متوفیوںکو خراج عقیدت

بہار اسمبلی کا مانسون اجلاس ، متوفیوںکو خراج عقیدت

سری جن اسکام تیجسوی پرساد کی نتیش کمار حکومت پر تنقید ، اسمبلی کے باہر پریس کانفرنس سے خطاب
پٹنہ21اگست (سیاست ڈاٹ کام ) بہار اسمبلی کے مانسون سیشن کے پہلے دن آج دونوں ایوانوں کی کارروائی متوفی لیڈروں اور ماہرین تعلیم کو خراج عقیدت پیش کرنے اور سیلاب میں ہلاک شدگان کے تئیں اظہار کرنے کے بعد کل تک کے لئے ملتوی کر دی گئی۔بہار اسمبلی میں مانسون سیشن کے پہلے دن ایوان کی کارروائی شروع ہوتے ہی نائب وزیر اعلی اور وزیر خزانہ سشیل کمار مودی نے مالی سال 18-2017 پہلے ضمنی اخراجات کی تفصیلات فائل ایوان کی میز پر رکھی ۔ پھر ایوان میں پہلے منظور شدہ بلوں کو گورنر کی طرف سے منظوری دیئے جانے کی اطلاع دی گئی۔ گورنر نے دونوں ایوانوں سے منظور شدہ آریہ بھٹ سائنس یونیورسٹی (ترمیمی) بل 2016 کو منظوری دینے کے بجائے ایوان سے اس پر نظر ثانی کرنے کو کہا ہے ۔ بہار قانون ساز کونسل میں ڈپٹی چیئرمین ہارون رشید کے کرسی پر بیٹھتے ہی راشٹریہ جنتا دل (آر جے ڈی) کے ارکان نے سرجن گھوٹالے کا معاملہ اٹھایا اور نعرے بازی کرتے ہوئے ایوان کے وسط میں آ گئے ۔ آر جے ڈی کے اراکین ‘ سرجن کے دورجن استعفی دو، خزانہ چور گدی چھوڑو’ کے نعرے لگائے ۔ ہنگامے کے درمیان ہی سابق وزیر اعلی اور آر جے ڈی کی سینئر لیڈر محترمہ رابڑی دیوی نے کہا کہ وزیر اعلی مسٹر نتیش کمار پہلے استعفی دیں ، اس کے بعد سرجن گھوٹالے کی مرکزی تفتیشی بیورو (سی بی آئی) سے انکوائری کرایا جائے ، نہیں تو ایوان چلنے نہیں دیں گے ۔ محترمہ رابڑی دیوی نے کہا کہ سرجن گھوٹالہ مدھیہ پردیش کے ویاپم گھوٹالہ سے بھی بڑا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ سرجن گھوٹالہ میں ایک ملزم کی موت ہوگئی ہے اور ویاپم گھوٹالہ میں بھی ثبوتوں کو ختم کرنے کے لئے اسی طرح کی موت ہوئی تھی۔ انہوں نے الزام لگایا کہ حکومت پہلے سے ہی سرجن گھوٹالہ سے واقف تھی لیکن جان بوجھ کر اس کو دبا کر رکھا گیا تھا۔دریں اثنا، وزیر صحت منگل پانڈے نے مالی سال 2017-18 کے پہلے ضمنی اخراجات کی تفصیلات کو ایوان کی میز پر رکھا۔بعد میں دونوں ایوانوں میں متوفی اراکین اسمبلی اور ماہرین تعلیم نیز سابق مرکزی وزیر ونود کو خراج عقیدت پیش کیا گیا اور ریاست میں حالیہ سیلاب کی تباہی سے مرنے والے لوگوں کے تئیں اظہار تعزیت کیا گیا۔ جن رہنماؤں اور ماہرین تعلیم کو خراج عقیدت پیش کیا گیا ان میں سابق ایم ایل سی بدرینارائن لال ، پی کے سنھا، سابق ممبر اسمبلی سنیلا دیوی، عدنان خان، راجکشور سنہا، خلائی سائنسداں پروفیسر یو آر راؤ ، پروفیسر یشپال، لوک گلوکار اجیت کمار اکیلا وغیرہ شامل ہیں۔اسی طرح دونوں ایوانوں میں گورکھپور اسپتال میں بچوں کی ہوئی موت، اتر پردیش میں بھیانک ریلوے حادثہ ، امرناتھ یاتریوں کی بس حادثے موت اور امرناتھ یاتریوں پر دہشت گردانہ حملے میں مارے گئے لوگوں کے تئیں بھی تعزیت پیش کی گئی۔ بعد میں دونوں ایوانوں کی کارروائی کل تک کے لئے ملتوی کردی گئی۔

TOPPOPULARRECENT