Monday , September 25 2017
Home / سیاسیات / بہار انتخابات : ایس پی ۔ این سی پی اتحاد سیکولر اتحاد کی شکایت

بہار انتخابات : ایس پی ۔ این سی پی اتحاد سیکولر اتحاد کی شکایت

مہاراشٹرا کے کسانوں کے مسائل پر این سی پی کا احتجاج
پٹنہ ۔ 14 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) سماج وادی پارٹی اور نیشنلسٹ کانگریس پارٹی نے بہار اسمبلی انتخابات کے لئے مخالف بی جے پی اور مخالف کانگریس علاقائی پارٹیوں کے اتحاد کا دعویٰ کیا۔ اس اتحاد کا اعلان سماج وادی پارٹی کے سکریٹری جنرل کرن موئے نندا اور این سی پی کے جنرل سکریٹری طارق انور کی ایک مشترکہ پریس کانفرنس میں کیا گیا۔ ایس پی اور این سی پی دونوں توہین کا الزام عائد کرتے ہوئے نشستوں کی تقسیم کے سلسلہ میں عظیم سیکولر اتحاد سے ترک تعلق کا اعلان کرچکے ہیں اور اب انہوں نے اپنا کا اتحاد قائم کرلیا ہے اور بہار اسمبلی انتخابات میں متحدہ مقابلہ کا اعلان کیا ہے۔ نئی دہلی سے موصولہ اطلاع کے بموجب بہار کے عظیم سیکولر اتحاد میں الیکشن کمیشن سے شکایت کی کہ بہار کے بی جے پی کارکن بھگوا پارٹی زیراقتدار ریاستوں میں خصوصی تربیت حاصل کررہے ہیں۔ انہیں خصوصی ٹرینر رعایتی فیس پر تربیت دے رہے ہیں۔ یہ انسداد جعلسازی قانون کے تمام معیاروں کی خلاف ورزی ہے اور ان کے خلاف کارروائی تقاضہ کرتی ہے۔ جے ڈی یو، آر جے ڈی اور کانگریس پر مشتمل اتحاد نے الزام عائد کیا کہ سرکاری مشنری کا غیرقانونی استعمال کیا جارہا ہے۔ ریلویز نے خصوصی ٹرینوں میں مسافروں کیلئے 60 فیصد رعایت کا اعلان کیا ہے جس سے سرکاری خزانہ کو زبردست نقصان ہوگا۔ اتحاد کے ایک وفد نے الیکشن کمیشن سے ملاقات کی اور بی جے پی کے خلاف انسداد کرپشن قانون، قانون تعزیرات ہند اور قانون عوامی نمائندگی کے تحت مختلف خلاف ورزیوں کیلئے کارروائی کرنے کا مطالبہ کیا۔ ممبئی سے موصولہ اطلاع کے بموجب بی جے پی کے سینئر قائدین بشمول پارٹی رکن پارلیمنٹ سپریا سولے آج سڑکوں پر نکل آئے تاکہ مہاراشٹرا کے قحط سے دوچار مرہٹواڑہ کے علاقہ کی قابل رحم صورتحال اور بی جے پی زیرقیادت حکومت کا کاشتکاروں کی ابتر حالت سے بے حسی کے رویہ کے خلاف احتجاج کیا جائے۔ بارہ متی کی لوک سبھا رکن سپریا سولے نے جالنہ میں احتجاج کیا جبکہ سابق ریاستی وزیر انیل دیشمکھ نے ناندیڑ میں احتجاج کی قیادت کی۔ عثمان آباد اور پربھنی کے سینئر قائد پدم سنگھ پاٹل اور قائد اپوزیشن مقننہ قونصل دھننجے منڈے نے راستہ روکو احتجاج کی قیادت کی۔ سابق اسپیکر مہاراشٹرا اسمبلی دلیپ والسے پاٹل نے اورنگ آباد میں احتجاج کی قیادت کی۔ احتجاج کے بعد ان تمام قائدین نے خود کو گرفتاری کیلئے پیش کیا۔ مرہٹواڑہ کے 8 اضلاع میں راستہ روکو اور ریل بھرو احتجاج جاری ہے۔

TOPPOPULARRECENT