Tuesday , August 22 2017
Home / Top Stories / بہار انتخابات :رائے دہی سے عین قبل بڑے گوشت پر متنازعہ اشتہارات

بہار انتخابات :رائے دہی سے عین قبل بڑے گوشت پر متنازعہ اشتہارات

بی جے پی کی آر جے ڈی اور کانگریس قائدین کے بیانات پر نتیش کمار سے وضاحت طلبی، عظیم اتحاد کی الیکشن کمیشن سے شکایت
پٹنہ ۔ 4 ۔ نومبر (سیاست ڈاٹ کام) علاقائی اخبارات میں بڑے گوشت کے بارے میں بی جے پی کے اشتہارات میں ایک بڑا تنازعہ کھڑا کردیا۔ سیمانچل کے بشمول تمام علاقہ کے مقامی زبانوں کے اخبارات میں جہاں کل رائے دہی مقرر ہے بی جے پی نے اشتہار شائع کروایا ہے ، جس میں چیف منسٹر نتیش کمار کی ’’بار بار توہین انگیز‘‘ بیانات پر خاموشی پر اعتراض کیا گیا ہے اور ان سے صدر راشٹریہ جنتادل لالو پرساد یادو ، نائب صدر رگھو ونش پرساد سنگھ اور چیف منسٹر کرناٹک ، کانگریسی قائد سدا رامیا کے بڑے گوشت کھانے کے بارے میں اعلان پر نتیش سے جواب طلب کیا گیا ہے۔ عظیم سیکولر اتحاد میں جے ڈی یو ، آر جے ڈی اور کانگریس شامل ہیں۔ اس متنازعہ اشتہار کے سلسلہ میں عظیم سیکولر اتحاد نے الیکشن کمیشن سے رجوع ہوکر بی جے پی کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا گیا ہے ۔ کشن گنج ، سہرسا اور اس علاقہ کے دیگر مقامات پر مقامی زبان کے اخبارات میں بی جے پی نے اشتہار شائع کرتے ہوئے نتیش کمار سے ان کے دوستوں کے بار بار اہانت انگیز بیانات پر جواب طلب کیا ہے ۔ ان علاقوں میں کل پانچویں اور قطعی آخری مرحلہ کی رائے دہی مقرر ہے ۔ بی جے پی کے اشتہار میں چیف منسٹر سے کہا گیا ہے کہ وہ ووٹ بینک سیاست ترک کردیں اور اس سوال کا جواب دیں کہ کیا وہ اپنے دوستوں کے بڑے گوشت کے بارے میں بیانات سے متفق ہیں۔

ایڈیشنل چیف الیکٹورل آفیسر آر لکشمنن نے آج کہا کہ الیکشن کمیشن ضلع مجسٹریٹس سے جواب طلب کرے گا کہ کیا ان اشتہارات سے جو مقامی زبانوں کے اخبارات میں شائع کئے گئے ، انتخابی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی ہوتی ہے۔ اشتہار میں لالو پرساد یادو کے ’’ہندو بھی بڑا گوشت کھاتے ہیں‘‘ والے تبصرہ کے بارے میں، رگھو ونش پرساد سنگھ کے ’’ویدوں اور پرانوں میں لکھا ہے کہ سنت بھی دورہ قدیم میں بڑا گوشت کھایا کرتے تھے‘‘ اشتہار میں چیف منسٹر کرناٹک سدا رامیا کا تبصرہ بھی شامل کیا گیا ہے، جنہوں نے کہا تھا کہ ’’اگر میں بڑا گوشت کھانا چاہوں تو کوئی بھی مجھے نہیں روک سکتا‘‘۔ اشتہار میں کہا گیا ہے کہ جواب نہیں ووٹ نہیں۔ نتیش کمار زیر قیادت عظیم اتحاد نے بی جے پی کے بڑے گوشت کے بارے میں اس اشتہار پر سخت اعتراض کیا۔ جے ڈی یو کے جنرل سکریٹری کے سی تیاگی نے کہا کہ جے ڈی یو ، آر جے ڈی اور  کانگریس کا ایک وفد دہلی میں الیکشن کمیشن سے آج ملاقات کرے گا اور بی جے پی کے متنازعہ اشتہار کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کرے گا ۔ انہوں نے کہا کہ تینوں پار ٹیوں کے قائدین اس سلسلہ میں پٹنہ میں الیکشن آفس میں ایک یادداشت بھی پیش کریں گے۔ اگر الیکشن کمیشن سخت کارروائی کرنے سے قاصر رہتا ہے تو ہم صدر جمہوریہ پرنب مکرجی کا دروازہ کھٹکھٹائیں گے ۔ سی پی آئی ایم نے بھی مطالبہ کیا کہ الیکشن کمیشن کو بی جے پی کے خلاف از خود کارروائی کرنا چاہئے ۔ اس کے بیان میں کہا گیا ہے کہ دال اور پھوٹ پیدا کرنے والی سیاست این ڈی اے کے مقدر پر بہار انتخابات میں مہر لگادیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ سوچنا سادہ لوہی ہے کہ عوام دال کو بھول جائیں گے، اگر آپ بڑے گوشت اور مذہب پر زور دیں ۔سی پی آئی ایم نے کہا کہ یقیناً بہار انتخابات میں بی جے پی کے مقدر پر مہر لگ جائے گی۔

TOPPOPULARRECENT