Tuesday , August 22 2017
Home / سیاسیات / بہار ’جنگل راج‘کے دور میں ‘پاسوان کا الزام

بہار ’جنگل راج‘کے دور میں ‘پاسوان کا الزام

کالے بازاریوںکو کچلنے مرکز کی مہم مؤثر ‘ مرکزی وزیر برائے اُمور صارفین ‘ تغذیہ و عوامی تقسیم کا بیان

پورٹ بلیر۔7فبروری ( سیاست ڈاٹ کام ) مرکزی وزیر برائے اُمور صارفین ‘ تغذیہ و عوامی نظام تقسیم رام ولاس پاسوان نے آج الزام عائد کیا کہ اب بہار ’’جنگل راج‘‘ کے دور سے گذر رہا ہے اور چیف منسٹر نتیش کمار کو مستعفی ہوجانا چاہیئے ۔ انہوں نے کہا کہ بہار کے رائے دہندوں کو اب اپنی غلطیوں کا احساس ہوگیا ہے کہ انہوں نے موجودہ حکومت کو برسراقتدار لایا ۔ وہ جزیرہ پورٹ بلیرکے دو روزہ سرکاری دورہ پر یہاں آئے ہوئے ہیں ۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ بہار میں نظم و ضبط کی صورتحال ابتر ہوتی جارہی ہے اور چیف منسٹر کو مستعفی ہوجانا چاہیئے ۔ نتیش کمار پر تنقید کرتے ہوئے ایل جے پی قائد نے کہا کہ چیف منسٹر کو اچھی حکمرانی کے بارے میں بات کرنے کا کوئی حق نہیں ہے کیونکہ دن دھاڑے قتل ہورہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ گذشتہ دو ماہ سے اے ایس آئی اشوک کمار یادو کو ویشالی میں گولی مار دی گئی ‘ تعمیراتی کمپنی کے دو انجنیئرس برجیش کمار اور مکیش کمار کو دربھنگہ میں گولی مار کر ہلاک کردیا گیا ۔ انہوں نے کہا کہ غذائی اجناس کے ایک تاجر کو مظفر پور میں گولی مار دی گئی ۔ انہوں نے کہا کہ مرکز نے کالے بازاریوں کے کچلنے کیلئے جو مہم چلائی تھی وہ کافی مؤثر ثابت ہوئی ۔ انہوں نے کہا کہ ذخیرہ اندوزوں اور بلیک مارکٹ کرنے والوں کو جو غذائی اجناس جیسے دال ‘ کالے بازار میں فروخت کرتے ہیں ان کی وزارت میں ان کے خلاف ایک مہم چلائی تھی جو بہت مؤثر ثابت ہوئی ۔ ریاستی حکومتوں کو سختی سے ہدایت دی جاچکی ہے کہ کالے بازاریوں اور ذخیرہ اندوزوں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے ۔ مرکزی وزیر انڈومان و نکوبار جزائر کے دو روزہ دورہ پر یہاں آئے ہوئے ہیں ۔ انہوں نے انتظامیہ کی کوششوں کی ستائش کی جنہوں نے جزیرہ نیل کو پہلا دھویں سے پاک جزیرہ بنادیا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ پورے گھرانے جن کی تعداد ان جزائر میں تقریباً ایک ہزار ہے ایل پی جی کنکشن حاصل کرچکے ہیں ۔ لکڑی یا کیروسین پکوان کیلئے استعمال نہیں کئے جاتے ۔ پاسوان نے اپنے مطالبہ کا اعادہ کیا کہ خانگی شعبوں میں بھی درجہ فہرست ذاتوں کو تحفظات فراہم کرنے چاہیئے ۔ انہوں نے کہاکیونکہ سرکاری محکمہ اپنی ملازمتیں خانگی شعبہ کو آؤٹ سورس کررہے ہیں اس لئے خانگی شعبہ میں بھی درجہ فہرست ذاتوں کو تحفظات فراہم کئے جانے چاہیئے ۔ انہوں نے وزیراعظم نریندر مودی کے ’سوچھ بھارت ابھیان‘ کی بھرپور ستائش کی۔

TOPPOPULARRECENT