Sunday , August 20 2017
Home / سیاسیات / ’’بہار میں بی جے پی کی ناکامی کیلئے مودی ، امیت شاہ قصوروار نہیں ‘‘

’’بہار میں بی جے پی کی ناکامی کیلئے مودی ، امیت شاہ قصوروار نہیں ‘‘

تنقیدیں تبصرے کرنے والے لیڈروں کیخلاف کارروائی کرنے کا مطالبہ : نتن گڈکری
ناگپور۔ 11 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) بہار میں بی جے پی کی شرمناک ناکامی کے بعد پارٹی کے اندر ہونے والی تنقیدوں اور نکتہ چینی کے درمیان مرکزی وزیر ٹرانسپورٹ نتن گڈکری نے آج وزیراعظم نریندر مودی اور پارٹی صدر امیت شاہ کی پرزور مدافعت کی اور پارٹی کے بزرگ قائدین کو بہار ناکامی کا ذمہ دار ٹھہرتے ہوئے کی جانے والی تنقیدوں کو مسترد کرتے ہوئے انہوں نے ایسے لیڈروں کے خلاف سخت کارروائی کرنے کا مطالبہ کیا جو پارٹی قیادت پر اُنگلیاں اُٹھا رہے ہیں۔ گڈکری کا کہنا ہے کہ بہار میں انتخابی ناکامی کے لئے وزیراعظم مودی اور امیت شاہ کو ذمہ دار ٹھہرایا نہیں جاسکتا۔ سابق بی جے پی صدر گڈکری نے یہ بھی مطالبہ کیا کہ مودی اور امیت شاہ کے خلاف ’’غیرذمہ دارانہ‘‘ بیانات دینے والوں کے خلاف سحت ترین کارروائی کی جانی چاہئے۔ یہ لوگ بی جے پی کے اندر دراڑیں ڈالنے کی کوشش کررہے ہیں۔ اس کے علاوہ ہندی ریاست بہار میں این ڈی اے کی بدترین شکست کے لئے حلیف پارٹیوں اور بی جے پی کے اندر پھوٹ پیدا کرنا چاہتے ہیں۔ مودی اور امیت شاہ کو ہی اس ناکامی کا ذمہ دار ٹھہرایا نہیں جاسکتا۔ بہار میں بی جے پی نے کمزور مظاہرہ کیا ہے، اس کی ناکامی کے لئے سب ذمہ دار ہیں۔ پارٹی کے عہدیداروں نے پارٹی صدر امیت شاہ سے کہا ہے کہ جو لوگ غیرذمہ دارانہ بیانات دے رہے ہیں، ان کے خلاف سخت کارروائی کی جانی چاہئے۔ ان کے اس طرح کے تبصروں سے پارٹی کی امیج کو دھکہ پہونچ رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جب پارٹی کو ناکامی کا سامنا ہوتا ہے تو ہر کوئی خوداحتسابی کی بات کرتا ہے لیکن جب کامیابی ملتی ہے تو کوئی بھی تجزیہ کرنے کا مطالبہ نہیں کرتا۔

بی جے پی کے بزرگ قائدین ایل کے اڈوانی، مرلی منوہر جوشی، یشونت سنہا اور شانتا کمار پر غیرذمہ دارانہ بیانات دینے پر تنقید کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ان قائدین نے پارٹی کی ناکامی کا جائزہ لینے پر زور دیا ہے۔ ان کے یہ بیانات نریندر مودی اور امیت شاہ کی قیادت کے خلاف بغاوت کے مترادف نہیں۔ ہم اس مسئلہ پر اڈوانی جی سے بات کریں گے۔ انہوں نے امیت شاہ کے بی جے پی صدر کی حیثیت سے استعفے کے امکان کو مسترد کردیا اور کہا کہ بہار میں ناکامی کی وجہ سے پارٹی صدر کو اپنا عہدہ چھوڑنے کی ضرورت نہیں ہے۔ ناکامی اور کامیابی انتخابات کا حصہ ہے۔ گڈکری نے اعتراف کیا کہ جنتا دل (یو)، آر جے ڈی اور کانگریس کے اس عظیم سیکولر اتحاد نے بہار میں خود کو قوی بنالیا ہے۔ اب ہماری کوشش یہ رہے گی کہ ہم بہار میں خود کو مضبوط بنانے کے لئے کام کریں۔ انہوں نے احساس ظاہر کیا کہ مابعد بہار انتخابات جن پارٹیوں نے این ڈی اے کی مخالفت کی تھی، اب وہ ایک دوسرے سے ملنے کی کوشش کریں گی۔ بہار میں رائے دہندوں نے بی جے پی کو اپنا خط اعتماد نہیں دیا ہے، ہم عوام کے اس فیصلہ کا احترام کرتے ہیں اور پارٹی کو مضبوط بنانے کے لئے کام کریں گے۔

TOPPOPULARRECENT