Sunday , October 22 2017
Home / Top Stories / بہار میں ڈیم افتتاح سے عین قبل ٹوٹ گیا!

بہار میں ڈیم افتتاح سے عین قبل ٹوٹ گیا!

نتیش کمار کا پروگرام منسوخ کرنا پڑا، پراجیکٹ کی تعمیر میں کرپشن: اپوزیشن

بھاگل پور/پٹنہ۔20 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) حکومت بہار کے لیے بڑی پشیمانی کے واقعہ میں چیف منسٹر کے ہاتھوں آج 389.31 کروڑ روپئے کی گنگا پمپ کنال اسکیم کا افتتاح منسوخ کردینا پڑا کیوں کہ نہر کی ایک دیوار یکایک منہدم ہوگئی اور تیزرفتار پانی نے ٹائون شپ کے کئی حصوں کو زیر آب کردیا۔ دریائے گنگا کے پانیوں کی زبردست لہر کی ضرب یہ دیوار برداشت نہ کرسکی اور گر گئی جبکہ گزشتہ روز آزمائش کے طور پر پمپ کو چالو کیا گیا تھا۔ یہ واقعہ ضلع بھاگلپور کے بٹیشورستھان میں پیش آیا۔ حکومت نے واقعہ کی تحقیقات کا حکم دیا ہے۔ چیف منسٹر نتیش کمار اس کنال اسکیم کا افتتاح کرنے والے تھے، جس کا مقصد ریاست اور پڑوسی جھارکھنڈ میں آبپاشی کی سہولیات فراہم کرنا ہے۔ دیوار ٹوٹتے ہی تیزرفتار پانی کہل گائوں میں گھس گیا اور این ٹی پی سی ٹائون شپ کے ساتھ ساتھ بعض شہری علاقوں بشمول کہل گائوں سیول جج اور سب جج کی قیام گاہ محصور ہوگئے۔ پٹنہ میں جاری کردہ سرکاری بیان میں کہا گیا کہ بھاگلپور میں آج مقررہ چیف منسٹر کا مجوزہ پروگرام تکنیکی وجوہات کے سبب منسوخ کردیا گیا ہے۔ گزشتہ روز اس پراجیکٹ کے افتتاح کے تعلق سے اخبارات میں اشتہارات شائع ہوئے جس میں بتایا گیا کہ چیف منسٹر یہ افتتاح وزیر آبی وسائل و آبپاشی راجیو رنجن سنگھ عرف للن سنگھ اور مقامی کانگریس ایم ایل اے سدانند سنگھ کی موجودگی میں کریں گے۔ آر جے ڈی ورکرس نے بھاگلپور میں نتیش کمار اور راجیو للن سنگھ کے علامتی پتلے نذرآتش کرتے ہوئے اس پراجیکٹ کی تعمیر میں کرپشن کا الزام عاید کیا۔ محکمہ آبی وسائل کے پرنسپل سکریٹری ارون کمار سنگھ بھاگلپور ڈی ایم اور ایس پی کے ہمراہ این پی ٹی سی ٹائون شپ اور بعض سیول علاقوں سے پانی کی نکاسی کی کوششوں کی راست نگرانی کررہے ہیں۔ یہ پراجیکٹ تقریباً 3 کیلومیٹر طویل ہے۔ ارون سنگھ نے میڈیا کو بتایا کہ پانی کے بہائو کو روکنے کے لیے ریت کے تھیلوں کا استعمال کیا جارہا ہے۔ اس پراجیکٹ کے بارے میں حکومتی بروشر سے متعلوم ہوتا ہے کہ یہ کنال بہار اور جھارکھنڈ کی جوائنٹ اسکیم ہے جس کے تحت بھاگلپور میں 18620 ہیکٹر اراضی کو سیراب کیا جاسکے گا جبکہ جھارکھنڈ کے ضلع گوڈا کے 4038 ہیکٹر علاقے کو بھی آبپاشی کی سہولت فراہم ہوگی۔

 

افتتاح سے پہلے ہی ڈیم کا ٹوٹنا بدعنوانی کا ثبوت ، نتیش استعفیٰ دیں:لالو
پٹنہ، 20ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) راشٹریہ جنتا دل کے سربراہ لالو پرساد یادو نے بہار میں بھاگلپور ضلع میں ٹرائل رن کے دوران پانی کے دبائو سے گنگاپمپ نہر پراجیکٹ کے ڈیم کی دیوار ٹوٹ جانے کے معاملے میں وزیر اعلی نتیش کمار اور آبی وسائل کے وزیر راجیو رنجن سنگھ عرف للن سنگھ کو قصور وار ٹھہراتے ہوئے ان سے استعفی دینے اور اس معاملے کی اعلی سطح پر انکوائری کرانے کا مطالبہ کیا ہے ۔ لالو یادو نے آج یہاں کہا کہ بھاگلپور ضلع کے کہل گاوں میں 828کروڑ روپے کی لاگت سے تیار بٹیشور گنگا پمپ نہر پروجیکٹ کا افتتاح آج صبح نتیش کمار کرنے والے تھے ۔ جلسہ گاہ بھی سج دھج کر تیار تھا لیکن کل شام ٹرائل رن کے دوران باندھ کی دیوار پانی کے دبائو سے ٹوگ گئی۔
جس سے یہ ثابت ہوتا ہے کہ باندھ کی تعمیر میں معیار کا خیال نہیں رکھا گیا اور بڑے پیمانے پر بدعنوانی ہوئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس کی نگرانی کا ذمہ محکمہ کے وزیر اور چیف منسٹر کا ہے ۔ اس معاملے میں لاپرواہی ہوئی ہے اس لئے جانچ سے پہلے قصور وار وزیر اور وزیر اعلی کو استعفی دے دینا چاہئے ۔ آر جے ڈی سربراہ نے کہا کہ ا س سے قبل شمالی بہار میں جو سیلاب سے تباہی ہوئی اس کے لئے بھی وزیر اعلی اور آبی وسائل کے وزیر ہی ذمہ دار ہیں۔ وہ پہلے سے ہی کہتے رہے ہیں کہ سیلاب اچانک نہیں آگیا بلکہ اسے جان بوجھ کر لایا گیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ شمالی بہار میں جب سیلاب آیا تو آبی وسائل کے وزیر نے کہا تھا کہ باندھ کے اوپر گاوں والے اناج رکھتے تھے جس کی وجہ سے وہاں چوہوں نے گھر بنالیا تھا اور اسی وجہ سے باندھ ٹوٹ گئے تھے ۔ اب بھاگلپور میں کیا مگرمچھ نے باندھ کی دیوار توڑی ہے ۔

 

TOPPOPULARRECENT