Monday , October 23 2017
Home / Top Stories / بہار میں کشیدہ شراب کے استعمال سے 12 افراد کی موت

بہار میں کشیدہ شراب کے استعمال سے 12 افراد کی موت

نشہ بندی کے نفاذ میں حکومت ناکام، بی جے پی لیڈر شاہنواز حسین کا الزام
گوپال گنج 17 اگسٹ (سیاست ڈاٹ کام) بہار کے ضلع گوپال گنج میں زہریلی شراب کے استعمال سے 12 افراد کی موت واقع ہوگئی ہے جہاں پر جاریہ سال کے ماہ اپریل سے نشہ بندی نافِذ العمل ہے۔ تاہم سرکاری حکام کا دعویٰ ہے کہ اموات کی وجوہات واضح نہیں ہیں اور اس واقعہ کی تحقیقات کا حکم دے دیا گیا ہے۔ گوپال گنج کے ضلع مجسٹریٹ راہول کمار نے بتایا کہ مبینہ کشیدہ شراب کے استعمال سے 12 افراد فوت ہوئے ہیں۔ یہ اموات ضلع کے 5 پولیس اسٹیشنوں کے تحت مختلف علاقوں میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران واقع ہوئی ہے۔ یہ دریافت کئے جانے پر مذکورہ اموات ، ناجائز شراب کے استعمال کا نتیجہ ہیں۔ انھوں نے بتایا کہ بعض ارکان خاندان نے الزام عائد کیا ہے کہ گزشتہ شام کشیدہ شراب کے استعمال سے ان کے رشتہ داروں کی موت واقع ہوئی ہے۔ جبکہ متوفی افراد کے بعض رشتہ داروں نے تحریر میں بتایا کہ یہ اموات کشیدہ شراب سے نہیں ہوئی ہے۔ ضلع مجسٹریٹ سے کہاکہ یہ اموات کسی ایک وجہ سے نہیں ہوئی ہیں۔ کیوں کہ 5 پولیس اسٹیشن مچھا، تھاومے، یادو پور، سدھ والیا اور کوتوالی کے تحت مختلف علاقوں سے مختلف اوقات میں ہوئی ہیں۔ انھوں نے بتایا کہ یہ تحقیقات کا حکم دے دیا گیا ہے کہ بعض افراد کی موت کہیں کشیدہ شراب کے استعمال سے تو نہیں ہوئی ہے؟ اور تحقیقاتی ٹیم تمام پہلوؤں سے تحقیقات کرے گی۔ انھوں نے بتایا کہ سرکاری حکام نے 12 میں سے 5 نعشوں کو ان کے رشتہ داروں کی تحویل سے حاصل کرلیا ہے۔ بغیر پوسٹ مارٹم جبکہ مابقی 7 نعشوں کی آخری رسومات ادا کردی گئی ہیں۔

مسٹر راہول کمار نے کہاکہ فی الحال قطعی طور پر اموات کی اصل وجوہات کا خلاصہ نہیں کیا جاسکتا۔ پوسٹ مارٹم رپورٹ پیش کئے جانے اور متوفی افراد کے رشتہ داروں کے بیانات لینے کے بعد ہی حقیقی وجوہات کا پتہ چلے گا۔اطلاعات کے مطابق ان متاثرین نے منگل کی شب ٹاون تھانہ کی ہرکھوا کھجور بنی علاقہ میں شراب پی تھی۔ جلد ہی اس کے پیٹ میں درد ہونے لگا اور چند ایک کو الٹیاں بھی ہوئیں۔ ان لوگوں کو سرکاری ہسپتال لے جایا گیا جہاں چھ افراد نے علاج کے دوران دم توڑ دیا ۔ چار متاثرین کو انکے رشتہ دار گرفتاری کے خوف سے قریبی گورکھپور (یو پی) کے ایک نجی ہسپتال میں لے گئے ۔مرنے والوں کے نام منوج، شاہ رام جی شرما، سبراتی میاں، پرمانند مہتو، اومیش چوہان، دنیش مہتو، منتو گری، ششی کانت ، درگیش شاہ اور رام جی شاہ تھے ۔ دریں اثناء بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے بہار کے گوپال پور میں مبینہ زہریلی شراب نوشی سے 12 سے زائد افرادکی موت پر دکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ پارٹی ریاست میں مکمل شراب بندی کے حق میں ہے لیکن اس حوالے سے نتیش حکومت کے تغلق فرمان کے سخت خلاف ہے ۔بی جے پی کے ترجمان اور سابق مرکزی وزیر سید شاہنوازحسین نے آج یہاں ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ مکمل شراب بندی کا بہار حکومت کافیصلہ درست ہے لیکن کسی کے گھرمیں شراب کی خالی بوتل بھی پائے جانے پر پورے گھر والوں کے خلاف جرمانے کی سزا تغلق فرمان کے مترادف ہے ۔

TOPPOPULARRECENT