Sunday , August 20 2017
Home / سیاسیات / بہار کیلئے وزیراعظم کا خصوصی پیاکیج، پرانی اسکیمات کا چربہ

بہار کیلئے وزیراعظم کا خصوصی پیاکیج، پرانی اسکیمات کا چربہ

نتیش کمار حکومت کامودی پیاکیج کے جواب میں 2.70 لاکھ کروڑ کا ترقیاتی فنڈ

پٹنہ ۔ 28 اگست (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم کی جانب سے بہار کیلئے اعلان کردہ 1.25 لاکھ کروڑ کے خصوصی پیاکیج کے جواب میں چیف منسٹر بہار نتیش کمار نے آج مفت برقی اور ہر گھر کو مفت پانی کی سربراہی کے لئے 2.70 لاکھ کروڑ کے پیاکیج کا اعلان کیا۔ وزیراعظم کے خصوصی پیاکیج پر تنقید کرتے ہوئے نتیش کمار نے یہاں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مرکز کے اس تشہیری پیاکیج میں کچھ بھی نہیں ہے بلکہ یہ پیاکیج پرانی اسکیمات کا چربہ ہے۔ میرے پیاکیج 2.70 لاکھ کروڑ کو ترقیاتی کاموں کیلئے استعمال کیا جائے گا اس کیلئے وسائل متحرک کئے جارہے ہیں۔ یہ میرے دل کی بات ہے۔ میں نے کبھی من کی بات نہیں کی۔ بہار میں مختلف شعبوں میں جاری اسکیمات کے علاوہ مزید اسکیمات کیلئے 7 نکاتی ترقیاتی منصوبہ بنایا گیا ہے۔ نتیش کمار نے پریس کانفرنس کے دوران وزیرفینانس بجیندر یادو اور سینئر وزیر وجئے چودھری کے ساتھ خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ان کی حکومت ترقیاتی منصوبہ رکھتی ہے۔ پریس کانفرنس میں اخباری نمائندوں کے سوالات کا جواب دیتے ہوئے کہ آیا یہ پیاکیج جنتادل یو، آر جے ڈی اور کانگریس پر مشتمل سیکولر اتحاد کا منشور تو نہیں ہے۔ انہوں نے جواب دیا کہ اس طرح کی منفی سوچ مت رکھئے۔ یہ میرے عہد کی پابندی ہے کہ میں عوام کیلئے کچھ کرنا چاہتا ہوں۔ میں جانتا ہوں کہ عوام مجھ پر بھروسہ رکھتے ہیں اور میں ان کے بھروسہ کو برقرار رکھوں گا۔

جب ان سے مزید سوال کیا گیا کہ آیا آر جے ڈی اور کانگریس ان کے ویژن کی حمایت کرتی ہیں، انہوں نے کہا کہ میں بہار کے آنے والے اسمبلی انتخابات میں اس سیکولر اتحاد کا لیڈر ہوں۔ نتیش کمار کے 7 نکاتی ترقیاتی منصوبے میں نوجوانوں، خواتین، بیروزگاروں اور نوجوان صنعتکاروں پر خصوصی توجہ دی جارہی ہے۔ ہر گھر کو مفت پینے کا پانی اور برقی کے علاوہ بیت الخلاء کی تعمیر کیلئے ضروری اقدامات کئے جائیں گے۔ 7 نکاتی ترقیاتی منصوبے کی تفصیلات بیان کرتے ہوئے نتیش کمار نے کہا کہ اس پروگرام کے تحت ریاست کی آبادی کی بڑی تعداد کو فائدہ پہنچایا جائے گا۔ جو نوجوان 20 تا 25 سال کی عمر کے ہیں انہیں 9 ماہ ہر ماہ 2 مرتبہ ایک ہزار روپئے دیئے جائیں گے تاکہ وہ اپنی ملازمت تلاش کرنے کے دوران انہیں خرچ کرسکیں۔ ہر نوجوان کو جس نے بارہویں جماعت کامیاب کیا ہے، اسے اسٹوڈنٹ کریڈٹ کارڈ دیا جائے گا جس کے تحت اسے کسی بھی بینک سے 4 لاکھ روپئے کا قرض حاصل ہوگا۔ ریاستی حکومت اس کریڈٹ کارڈ کے ذریعہ حاصل کردہ لون پر 3 فیصد شرح سود ادا کرے گی۔ ریاستی حکومت 500 کروڑ روپئے کا سرمایہ فنڈ قائم کرے گی جس کے ذریعہ نوجوان صنعتکاروں کی مدد کی جائے گی اور مینوفکچرنگ یونٹس قائم کرنے کیلئے امداد د ی جائے گی۔

TOPPOPULARRECENT