Thursday , September 21 2017
Home / سیاسیات / بہار کی شکست سے معیشت و اصلاحات پر کوئی اثر نہیں ہوگا

بہار کی شکست سے معیشت و اصلاحات پر کوئی اثر نہیں ہوگا

نتیش کمار سے جی ایس ٹی بل کی حمایت کی توقع ۔ وزیر فینانس ارون جیٹلی کا بیان
نئی دہلی 9 نومبر ( سیاست ڈاٹ کام ) وزیر فینانس ارون جیٹلی نے آج کہا کہ بی جے پی کو بہار میں جو انتخابی شکست ہوئی ہے اس کے نتیجہ میں ملک کی معیشت پر یا اصلاحات کے پروگرام پر کوئی اثر نہیں ہوگا اور حکومت جی ایس ٹی قانون کو منظوری دلانے کی کوشش جاری رکھے گی ۔ ارون جیٹلی نے کہا کہ وہ نہیں سمجھتے کہ اس سے معیشت کو کوئی جھٹکا لگے گا ۔ جو اصلاحات شروع کی گئی ہیں وہ جاری رہیں گی ۔ ان کو تیز رفتار سے جاری رہنے کی ضرورت ہے ۔ انہوں نے اس امید کا اظہار کیا کہ جنتادل یونائیٹیڈ جی ایس ٹی کو منظوری دلانے دستوری ترمیمی بل کی تائید کریگی ۔ اصلاحات کے تعلق سے ارون جیٹلی نے ٹی وی چینلوں سے کہا کہ حکومت اصلاحات کا عمل جاری رکھے گی اور عاملہ اقدامات کئے جائیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ اس کا سلسلہ آئندہ سال فبروری میں پیش کئے جانے والے بجٹ میں بھی شامل رہے گا ۔ جی ایس ٹی بل کے تعلق سے سوال کے جواب میں انہوں نے اس امید کا اظہار کیا کہ بہار سے اس قانون کی مدد کی جائیگی کیونکہ بہار میں کھپت زیادہ ہے اور نئے قانون سے ریاست کو فائدہ ہوسکتا ہے ۔ جیٹلی نے کہا کہ بہار اور جے ڈی یو نے لوک سبھا میں اس بل کی تائید کی تھی اور اگر نتیش کمار کا ایک ذمہ دار لیڈر کی حیثیت سے ترقی کے نعرہ پر انتخاب عمل میں آیا ہے تو یقینی طور پر وہ ریاست کیلئے مزید مالیہ حاصل کرنا چاہیں گے ۔ مرکزی حکومت چاہتی ہے کہ جی ایس ٹی کا آغاز یکم اپریل 2016 سے کردیا جائے لیکن دستوری ترمیمی بل راجیہ سبھا میں رکا ہوا ہے جہاں این ڈی اے کو اکثریت حاصل نہیں ہے ۔ اگر اس قانون پر عمل آوری کا آغاز ہوجاتا ہے تو اس کے نتیجہ میں اکسائز ‘ سرویس ٹیکس ‘ سیلس ٹیکس ‘ آکٹرائے وغیرہ یکجا ہوجائیں گے اور سارے ملک کیلئے ایک واحد بالواسطہ ٹیکس نظام قائم ہوجائیگا ۔ ارون جیٹلی نے اس یقین کا اظہار کیا کہ جی ایس ٹی بل کو منظوری حاصل ہوجائیگی اور اس پر عمل آوری کیلئے صرف کچھ وقت درکار ہے ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT