Saturday , September 23 2017
Home / ہندوستان / بہتر حکمرانی کیلئے 100 پسماندہ ترین اضلاع پر توجہ دی جائے

بہتر حکمرانی کیلئے 100 پسماندہ ترین اضلاع پر توجہ دی جائے

وزیر اعظم مودی کی حکام کو ہدایت ۔ اڈیشنل و جوائنٹ سکریٹریز کے ساتھ جائزہ اجلاس
نئی دہلی24 اگست ( سیاست ڈاٹ کام ) وزیر اعظم نریندر مودی نے سول سروس عہدیداروں سے کہا ہے کہ وہ بہتر حکمرانی پر زور دیتے ہوئے ملک کے 100سب سے زیادہ پسماندہ اضلاع پر توجہ مرکوز کریں جس سے انہیں ترقی کے پیمانوں پر قومی اوسط کے قریب لایا جاسکے ۔وزیراعظم نے حکومت ہند کے تحت 70 ایڈیشنل سکریٹری اور جوائنٹ سکریٹریریوں سے ملاقات کرکے تبادلہ خیالات کیے ۔ گفت وشنید کے دوران افسران نے ڈیجیٹل اور اسمارٹ حکمرانی ، انتظامی ضوابط اور جوابدہی ، شفافیت ، کاشتکاروں کی آمدنی کو دوگنا کرنے ، ہنرمندی ترقیات، سوچھ بھارت، صارفین کے حقوق ، ماحولیات کے تحفظ اور 2022 تک نئے ہندوستان کی تعمیر جیسے موضوعات پر اپنے تجربات پیش کئے ۔ وزیراعظم نے کہا کہ عام شہریوں کی فلاح وبہبود اور تسلی کیلئے ترقیات اور اچھی حکمرانی کا امتزاج لازمی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اچھی حکمرانی حکام کی ایک ترجیح ہونی چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کے تمام شعبوں کو باہم تال میل بناکر کام کرنا چاہئے اور ایسی ہم آہنگی کا مظاہرہ کرنا چاہئے جسکے توسط سے بہترین ممکنہ نتائج حاصل کیے جاسکیں۔ انہوں نے کہا کہ تمام حکام کو فیصلے لیتے وقت کمزور ، نادا ر اور عام شہریوں کی فلاح وبہبود کومدنظر رکھنا چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ آج دنیا ہندوستان کی جانب مثبت توقعات کے ساتھ دیکھ رہی ہے ۔ پوری دنیا یہ محسوس کرتی ہے کہ عالمی توازن کیلئے کامیاب ہندوستان کی اہمیت ہے ۔

ہندوستان کے عام شہریوں کے ذریعے ہر شعبے میں عمدگی تک پہنچنے کی توقع کے بارے میں بھی ایک دروں جذبہ پایا جاتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ معمولی پس منظر کے حامل نوجوان، جن کے وسائل بہت محدود ہیں، مسابقتی امتحانوں اور کھیل کود میں بہترین مقامات حاصل کررہے ہیں۔ انہوں نے حکام سے کہا کہ وہ صلاحیتوں کی اس نموکو آگے بڑھانے کوشش کریں اور اس جوش وجذبے اور توانائی کو یاد کریں جو ان کی اپنی ملازمت کے پہلے تین برسوں کے دوران ان میں پنہاں تھی۔ وزیراعظم نے کہا کہ حکام کیلئے یہ منفرد موقع ہے جب وہ ملک کی فلاح وبہبود کیلئے اپنا بہترین تعاون پیش کرسکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کے مختلف شعبوں کے مابین مؤثرداخلی مواصلات کو فروغ دینے اور بندھے ٹکے اصولوں سے انحراف کی بڑی اہمیت ہے ۔ انہوں نے فیصلہ سازی کے عمل میں رفتار اور اثرانگیزی کی ضرورت پر زور دیا۔ انہوں نے کہا ہے کہ نیک نیتی کے ساتھ ایماندارانہ فیصلہ لینے کی صورت میں مرکزی حکومت کی جانب سے ہمیشہ ان کی حوصلہ افزائی کی جائے گی۔ انہوں نے افسران سے کہا کہ وہ ہندوستان کے 100 از حد پسماندہ اضلاع پر اپنی توجہ مرکوز کریں تاکہ ان اضلاع ، مختلف ترقیاتی پیمانوں کے لحاظ سے ، اوسط قومی سطح پر لایا جاسکے ۔

TOPPOPULARRECENT