Wednesday , August 23 2017
Home / ہندوستان / بیرونی سرزمین پر ہندوستان کی ساکھ داغدار نہ بنائیں

بیرونی سرزمین پر ہندوستان کی ساکھ داغدار نہ بنائیں

بی جے پی اقتدار ریاستوں میں رشوت ستانی کیلئے بھی کیا گاندھی خاندان ہی ذمہ دار ہے ؟:سامنا
ممبئی۔ 8 جون (سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی کی کلیدی حلیف جماعت شیوسینا نے ہندوستان میں رشوت ستانی سے متعلق وزیراعظم نریندر مودی کے حالیہ ریمارکس کی مذمت کی اور ان سے کہا کہ وہ بیرونی سرزمین پر اپنے ملک کی ساکھ کو داغ دار بنانے سے باز رہیں۔ وزیراعظم پر ایک اور تنقیدی حملہ کرتے ہوئے شیوسینا نے مودی کی پھر ایک مرتبہ ’’سرزنش‘‘ کی اور یہ سوال بھی کیا کہ آیا بی جے پی کے زیراقتدار ریاستوں مہاراشٹرا، مدھیہ پردیش اور گجرات میں ہونے والے اسکامس کیلئے بھی گاندھی خاندان کو ہی موردالزام ٹھہرایا جائے گا۔ واضح رہے کہ وزیراعظم نریندر مودی نے اپنے پانچ قومی دورہ کے دوسرے مرحلے میں اتوار کو دوحہ میں ہندوستانی برادری سے خطاب کے دوران ہندوستان سے رشوت ستانی کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کا عہد کرتے ہوئے کہا تھا کہ کئی افراد کو ’مٹھائیوں‘ سے محروم کردینے کے سبب انہیں مسائل کا سامنا ہے اور انہوں نے سرکاری اسکیمات سے رقومات کے سرقہ اور ہیر پھیر کو روکتے ہوئے 36000 ہزار کروڑ روپئے بچائے ہیں۔ شیوسینا کے ترجمان مراٹھی روزنامہ ’’سامنا‘‘ نے اپنے اداریہ میں لکھا کہ ’’وزیراعظم نے یہ بیان کرتے ہوئے کہ ہندوستان کتنا رشوت خور ملک ہے، ہجوم سے داد و تحسین تو حاصل کی لیکن اس سے بیرونی سرزمین پر ہمارے ملک کی ساکھ داغ دار ہوتی ہے‘‘۔شیوسینا نے مودی پر ایک اور طنز کرتے ہوئے اس بات پر حیرت کا اظہار کیا کہ نئی حکومت کے برسراقتدار آنے کے دو سال بعد ہونے والی رشوت ستانی کے بارے میں عوام کس کو موردالزام ٹھہرائیں گے۔ اداریہ نے یہ استفسار کیا کہ ’’اس (رشوت ستانی) کیلئے ہم کس کو ذمہ دار قرار دیں گے۔ مہاراشٹرا ، مدھیہ پردیش اور گجرات میں جو کچھ ہورہا ہے، کیا اس کے لئے بھی ہم گاندھی خاندان کو ہی موردالزام ٹھہرائیں گے؟ ‘‘

TOPPOPULARRECENT