Monday , September 25 2017
Home / دنیا / بیرون ملک اعلیٰ تعلیم کے لیے اوورسیز اسکالر شپ اسکیم ، دوسرے مرحلے کا آغاز

بیرون ملک اعلیٰ تعلیم کے لیے اوورسیز اسکالر شپ اسکیم ، دوسرے مرحلے کا آغاز

آن لائن ادخال درخواست کی آخری تاریخ 29 دسمبر مقرر ، جلال الدین اکبر کا اعلامیہ
حیدرآباد ۔ 7 ۔ ڈسمبر (سیاست نیوز) بیرون ملک اعلیٰ تعلیم کے حصول کیلئے حکومت کی اوورسیز اسکالر شپ اسکیم کی دوسرے مرحلہ کی درخواستوں کی وصولی کا آغاز ہوچکا ہے ۔ ڈائرکٹر اقلیتی بہبود جلال الدین اکبر نے آج اس سلسلہ میں اعلامیہ جاری کیا۔ تعلیمی سال 2015-16 ء کے طرح بیرونی یونیورسٹیز میں اعلیٰ تعلیم کیلئے دوسرے مرحلہ کی درخواستیں آن لائین داخل کرنے کی آخری تاریخ 29 ڈسمبر مقرر کی گئی ہے۔ امیدوار 29 ڈسمبر کی شام 5 بجے تک ویب سائیٹ telanganaepass.cgg.gov.in پر آن لائین درخواستیں داخل کرسکتے ہیں۔ تمام مستحق اور اہل امیدوار جی او ایم ایس 24 اور جی او ایم ایس 124 میں مقرر شرائط کے مطابق اپنی درخواستیں داخل کرسکتے ہیں۔ آن لائین درخواستوں کے ادخال کے بعد دستاویزات کی ہاٹ کاپی متعلقہ ڈسٹرکٹ میناریٹی ویلفیر آفیسر کو پیش کرنی ہوگی۔ واضح رہے کہ اس اسکیم کے تحت پہلے مرحلہ میں 513 امیدواروں نے درخواستیں داخل کی تھیں جن میں 210 کو منتخب کیا گیا۔ منتخب امیدواروں کو پہلی قسط کے طور پر پانچ لاکھ روپئے کی اجرائی کیلئے متعلقہ عہدیداروں کو 10 ڈسمبر تک مہلت دی گئی ہے۔ اسی دوران محکمہ اقلیتی بہبود کے ذرائع نے بتایا کہ مزید 29 درخواستوں کو پہلے مرحلہ میں منتخب کیا گیا ہے جن کی دستاویزات کی جانچ کی جارہی ہے۔ ذرائع کے مطابق ابھی تک ریاست بھر میں جملہ 42 منتخب امیدواروں کو پہلی قسط کی رقم جاری کردی گئی۔ محکمہ ٹریژری نے یہ رقم طلبہ کے اکاؤنٹ میں جاری کردی ہے۔ تاہم حیدرآباد کے 137 منتخب طلبہ کو ابھی تک رقم جاری نہیں کی گئی، جس پر ڈسٹرکٹ میناریٹی ویلفیر آفیسر کو سکریٹری اقلیتی بہبود نے میمو جاری کیا ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ اقلیتی بہبود کے ضلعی عہدیداروں نے اپنے طور پر نئی شرائط لاگو کی ہیں جن کی تکمیل طلبہ اور ان کے سرپرستوں کیلئے ممکن نہیں ہے۔ عہدیداروں کو ہدایت دی گئی کہ وہ پہلے سے طئے شدہ شرائط کی تکمیل کرتے ہوئے پہلی قسط کی رقم جاری کردیں۔ رنگا ریڈی میں اس اسکیم کے تحت 25 طلبہ کو منتخب کیا گیا ہے۔ اس اسکیم کے تحت حکومت 10 لاکھ روپئے بطور اسکالرشپ جاری کرے گی اور پہلی قسط 5 لاکھ روپئے کے ساتھ ایک طرف کا فضائی کرایہ بھی ادا کیا جائے گا ۔ حیدرآباد میں پہلی قسط کی اجرائی میں تاخیر کے سبب طلبہ اور ان کے سرپرستوں میں تشویش کی لہر پائی جاتی ہے۔ اس سلسلہ میں ڈپٹی چیف منسٹر نے بھی عہدیداروں کو جلد رقم جاری کرنے کی ہدایت دی۔ پہلے مرحلہ کے تمام منتخب امیدواروں کو 10 ڈسمبر تک رقم جاری کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ حیدرآباد میں متعلقہ عہدیداروں کو ہدایت دی گئی کہ وہ دن رات کام کرتے ہوئے 10 ڈسمبر تک ایسے تمام طلبہ کو پہلی قسط کی رقم جاری کردیں جنہوں نے ضروری دستاویزات جاری کردی ہیں۔ پہلی قسط کے حصول کیلئے طلبہ کو یونیورسٹی کا ایڈمیشن کارڈ ، بورڈنگ کارڈ اور حلفنامہ داخل کرنا ہے۔ اس کے علاوہ ٹیوشن فیس اور بینک اکاؤنٹ کی تفصیلات بھی طلب کی گئی ہے۔ اقلیتی بہبود کے عہدیداروں نے منتخب طلبہ سے اپیل کی کہ وہ اپنے بینک اکاؤنٹس کا جائزہ لیں۔ طلبہ کے اسکالرشپ سے متعلق بینک اکاؤنٹ میں 5 لاکھ روپئے کی رقم قبول نہیں کی جاتی۔ اس سلسلہ میں کئی طلبہ نے عہدیداروں سے شکایت کی ہے۔ طلبہ کو مشورہ دیا گیا کہ وہ اپنے اسکالرشپ کے بینک اکاؤنٹ کو نارمل اکاؤنٹ میں منتقل کرتے ہوئے اس کی تفصیلات محکمہ اقلیتی بہبود کو پیش کریں، جس کے بعد پہلی قسط کے پانچ لاکھ روپئے ان کے اکاؤنٹ میں منتقل ہوجائیں گے ۔ کئی طلبہ کے بینک اکاؤنٹ کی تفصیلات میں پایا گیا کہ وہ اکاؤنٹ اسکالرشپ سے متعلق ہے، جسے نارمل اکاؤنٹ میں تبدیل کرنا ضروری ہے۔ حیدرآباد کے اقلیتی بہبود عہدیداروں کو ہدایت دی گئی کہ وہ اپنے طور پر جاری کی گئی نئی شرائط سے فوری دستبرداری اختیار کرلیں۔

TOPPOPULARRECENT