Saturday , July 29 2017
Home / شہر کی خبریں / بیرون ملک کالے دھن کو واپس لانے میں مودی کی ناکامی

بیرون ملک کالے دھن کو واپس لانے میں مودی کی ناکامی

ملک کی عوام کو پریشانی میں غرق کردیا ، سید عزیز پاشاہ کا شدید ردعمل
حیدرآباد ۔ 18 ۔ نومبر : ( سیاست نیوز ) : بیرون ممالک سے کالے دھن لانے میں ناکامی مودی حکومت ملک کے غریب عوام کو پریشانی میں ڈال چکی ہے ۔ بدعنوانی ، کالا بازاری اور کالے دھن باہر لانے کی دعویدار مودی حکومت نے 2 ہزار کی کرنسی رائج کرتے ہوئے اپنی پالیسی کو ظاہر کردیا ۔ ان خیالات کا اظہار جناب سید عزیز پاشاہ قادری سابق رکن پارلیمنٹ و سینئیر قائد کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا ( سی پی آئی ) نے کیا جو بھونگیر میں منعقدہ ضلع کی تنظیمی کانفرنس سے مخاطب تھے ۔ سی پی آئی قائد نے اپنا شدید ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ مرکزی حکومت سرمایہ داروں کے اشاروں پر نارچ رہی ہے جنہیں نہ غریبی پسند ہے اور نہ ہی غریب عوام ۔ یہ لوگ غریبی ختم کرنے کے نام پر غریب عوام کو ختم کرنا چاہتے ہیں ۔ انہوں نے وزیراعظم مودی کو سخت تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ حکومت اپنے مقاصد میں صرف 15 فیصد ہی کامیاب ہوئی ہے جب کہ ملک کی آبادی کا 85 فیصد حصہ شدید تکالیف کا شکار ہے ۔ انہوں نے الزام لگاتے ہوئے کہا کہ کرنسی تبدیلی کا علم بی جے پی قائدین کو پہلے ہی سے تھا ورنہ کرنسی تبدیلی کی خبر باہر نہیں آتی ۔ انہوں نے بتایا کہ ملک میں اس سے قبل 1954 اور 1978 میں بھی کرنسی کو تبدیل کیا گیا لیکن ایسی بے چینی کبھی پیدا نہیں ہوئی ۔ جو ملک کی عوام کو سامنا کرنا پڑرہا ہے ۔ سید عزیز پاشاہ قادری نے کہا کہ ماہر معاشیات بھی اس فیصلے سے الجھن کا شکار ہیں ۔ انہوں نے وزیراعظم پر عوام کو غلط گمراہ کرنے اور ان کا استعمال کرنے کا الزام لگاتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم 50 دن میں حالات معمول پر آنے کا دعویٰ کررہے ہیں جب کہ ماہر معاشیات اور ماہرین مبصرین کا کہنا ہے کہ 4 ماہ تک حالات معمول پر آنا مشکل ہے اور ملک میں بدنظمی کا ماحول پیدا ہوسکتا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ ملک میں 17 لاکھ سے زائد کرنسی نوٹوں میں 500 اور 1000 کی کرنسی 86 فیصد پائی جاتی ہے ۔ بغیر سونچے سمجھے منصوبہ بندی کیے بغیر اس طرح کا فیصلہ لیا گیا ۔ انہوں نے کرنسی نوٹوں پر پابندی کو بچکانہ فیصلہ قرار دیا جس کے سبب عام آدمی کی زندگی اجیرن بن گئی ہے جب کہ نئی جاری کردہ 2 ہزار کی کرنسی نوٹوں سے بھی مسائل پیدا ہورہے ہیں ۔ کئی دوکانات پر چلر کی کمی سے یہ کرنسی مشکلات کا سبب بنی ہوئی ہے ۔ انہوں نے 31 دسمبر تک پرانی کرنسی کو بحال کرنے کے اقدامات پر زور دیا ۔ اس موقع پر سی وینکٹ ریڈی ، ایڈیٹر سرینواس ریڈی و دیگر موجود تھے ۔۔

TOPPOPULARRECENT