Thursday , October 19 2017
Home / شہر کی خبریں / بیف فیسٹول کی اجازت دینے سے ہائی کورٹ کا انکار

بیف فیسٹول کی اجازت دینے سے ہائی کورٹ کا انکار

عثمانیہ یونیورسٹی طلباء اپنے موقف پر اٹل، پولیس کے وسیع تر انتظامات
حیدرآباد۔/9ڈسمبر، ( سیاست نیوز) حیدرآباد ہائی کورٹ نے عثمانیہ یونیورسٹی میں بیف فیسٹول منعقد کرنے کی اجازت دینے سے انکار کردیا۔ عدالت نے ریاستی حکومت کو ہدایت دی کہ وہ بیف فیسٹول روکنے کیلئے سٹی سیول کورٹ کی ہدایت پر سختی سے عمل آوری کرے۔ واضح رہے کہ اکھل بھارتیہ ودیارتھی پریشد کے لیڈر کڈیم راجو نے ہائی کورٹ سے رجوع ہوتے ہوئے درخواست کی تھی کہ وہ عثمانیہ یونیورسٹی میں بیف فیسٹول کے انعقاد کو روکنے کیلئے ریاستی حکومت کو ہدایت دے۔ ہائی کورٹ نے پولیس کو بھی ہدایت دی کہ وہ عثمانیہ یونیورسٹی میں لاء اینڈ آرڈر کی برقراری کو یقینی بنائے۔ سٹی سیول کورٹ نے 20ڈسمبر تک عثمانیہ یونیورسٹی میں کوئی فیسٹول نہ منانے کی ہدایت دی ہے۔ ڈیموکریٹک کلچرل فورم کی جانب سے 10ڈسمبر کو بیف فیسٹول منانے کا منصوبہ بنایا گیا تھا۔ ڈیموکریٹک کلچرل فورم نے کہا کہ وہ اپنے موقف پر اٹل ہے اور بیف فیسٹول کو ملتوی کرنے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔ پولیس نے عثمانیہ یونیورسٹی کیمپس میں کسی بھی ناخوشگوار واقعہ کو روکنے کیلئے سخت سیکورٹی انتظامات کئے ہیں۔ طلباء کی مختلف یونینوں نے یونیورسٹی میں کل بیف فیسٹول اور پورک فیسٹول منانے کا فیصلہ کیا ہے۔ ڈپٹی کمشنر پولیس ایسٹ زون اے رویندر نے بتایا کہ ہم نے تمام احتیاطی اقدامات کرلئے ہیں اور ہائی کورٹ نے بھی آج زبانی ہدایت دی ہے کہ عثمانیہ یونیورسٹی میں کوئی بھی فیسٹول منانے کی اجازت نہیں دی جائے اور یونیورسٹی کیمپس کی صورتحال کو جوں کا توں برقرار رکھا جائے۔ اب تک کسی کو بھی گرفتار نہیں کیا گیا ہے اگر ضرورت پڑی تو گرفتاری عمل میں لائی جائے گی۔

TOPPOPULARRECENT