Tuesday , September 26 2017
Home / Top Stories / بیف پر واٹس اپ پیام دینے والے کی اذیت رسانی سے موت

بیف پر واٹس اپ پیام دینے والے کی اذیت رسانی سے موت

پوسٹ مارٹم رپورٹ میں پولیس کا دعویٰ جھوٹا ثابت ہوا
پٹنہ ۔ /13 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) جھارکھنڈ میں مہناز انصاری کو پولیس نے بیف کے بارے میں واٹس اپ پیام بھیجنے پر اسے اشتعال انگیز قرار دیتے ہوئے گرفتار کیا تھا ۔ اس کی تحویل میں موت واقع ہوگئی جس پر پولیس نے کہا تھا کہ اذیت رسانی کی بنا نہیں بلکہ دماغی سوزش کے سبب اس کی موت واقع ہوئی ہے ۔ پوسٹ مارٹم رپورٹ نے پولیس کے اس دعویٰ کی قلعی کھول دی۔ 22 سالہ مہناز کو ضلع جام تارا میں /2 اکٹوبر کو گرفتار کیا گیا ۔ اس کی /9 اکٹوبر کو رانچی کے ایک ہاسپٹل میں موت واقع ہوگئی ۔ ارکان خاندان نے کہا کہ پولیس کی زدوکوب اور اذیت کے سبب انصاری کی موت واقع ہوئی ہے ۔ پوسٹ مارٹم رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ اس کے جسم کے اندرونی حصو ںپر زخم کے نشانات اور ورم پائے گئے ۔ ڈاکٹرس کو شبہ ہے کہ پولیس تحویل میں اس نے ابتدائی دنوں کچھ کھایا بھی نہیں تھا ۔انصاری کے پیٹ کے اندرونی اعضاء مزید معائنوں کیلئے فارنسک لیاب بھیجے جائیں گے ۔

TOPPOPULARRECENT