Tuesday , August 22 2017
Home / ہندوستان / بیف پر پابندی کیخلاف عام ہڑتال سرینگر میں عوام کی نقل و حرکت پر تحدیدات

بیف پر پابندی کیخلاف عام ہڑتال سرینگر میں عوام کی نقل و حرکت پر تحدیدات

سرینگر 12 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) ریاست بھر میں بیف پر پابندی کے لئے ہائیکورٹ کے احکامات کے خلاف علیحدگی پسند گروپس کی ہڑتال کے پیش نظر سرکاری حکام نے سرینگر کے متعدد علاقوں میں نظم و ضبط کی برقراری کے لئے تحدیدات عائد کردیئے ہیں۔ پولیس نے بتایا کہ سرینگر شہر کے بعض پولیس اسٹیشنس کے حدود میں امن و قانون کی برقراری کیلئے تحدیدات نافذ کردی گئی ہیں۔ انھوں نے بتایا کہ پولیس اسٹیشن نواہٹا، کھنیار، ایم آر گنج ، رینا واری، صفا کڈال، کارل نود، میسومہ کے حدود میں عوام کی نقل و حرکت پر تحدیدات عائد کردی گئی ہیں۔ یہ احتیاطی اقدامات محض نظم و ضبط کی برقراری کیلئے کئے گئے ہیں۔ مختلف علیحدگی پسند گروپس بشمول حریت کانفرنس، جے کے ایل ایف نے ہائیکورٹ حکم کے خلاف آج بند منانے کا اعلان کیا ہے تاکہ ریاست بھر میں بیف پر پابندی پر عمل آوری کیللئے پولیس کو عدالت کی ہدایت کے خلاف احتجاج کیا جاسکے۔ ماس ہڑتال کی وجہ سے شہر کے بیشتر علاقوں میں عام زندگی متاثر دیکھی گئی۔ دکانات، تجارتی ادارے، دفاتر، پٹرول پمپس، تعلیمی ادارے بند رکھے گئے ہیں جبکہ عوامی ٹرانسپورٹ کو سڑکوں سے ہٹادیا گیا۔ تاہم خانگی کاریں، کیابس اور آٹو رکشہ بعض علاقوں میں چلائے گئے۔ دریں اثناء شہر کے علاقوں صباکڈال، ہربل اور بٹاملو میں جھڑپوں کی اطلاع ہے جبکہ شمالی کشمیر میں ضلع بارہمولہ کے پٹھان علاقہ میں احتجاجی نوجوان اور سکیوریٹی فورسیس میں تصادم ہوگیا۔ سرکاری حکام نے اعتدال پسند حریت کانفرنس کے صدرنشین میر واعظ عمر فاروق اور جے کے ایل ایف صدرنشین محمد یٰسین ملک کو مکان پر نظربند کردیا۔

TOPPOPULARRECENT