Tuesday , September 26 2017
Home / ہندوستان / بینکس اور اے ٹی ایمس نقد رقم سے خالی

بینکس اور اے ٹی ایمس نقد رقم سے خالی

ممبئی۔ 14 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) اعلیٰ مالیتی کرنسی نوٹوں کی توثیق کے بعد آج کا دن 35 واں دن ہے لیکن بینکوں اور اے ٹی ایمس میں نقد رقم موجود نہیں ہے۔ طویل سے لے کر اوسط درجہ کی قطاریں بینکوں اور اے ٹی ایمس کے سامنے نظر آرہی ہیں۔ بینکس اپنے صارفین کو نقد رقم کی مطلوبہ مقدار فراہم کرنے سے قاصر ہیں۔ بیشتر اے ٹی ایمس کرنسی کی قلت کی وجہ سے بند کردیئے گئے ہیں۔ چند مقامات جیسے سیوری، وڈالا، گھاٹ کوپر، تھانے اور دہیسر میں عوام کی طویل قطاریں بینکوں کے کھلنے سے پہلے ہی دیکھی جارہی ہیں۔ اپنی ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے کثیر قومی کارپوریشن میں ملازم اشیش بنسوڈے نے کہا کہ انہوں نے کبھی اس احساس اور بے بسی کا زندگی کے کسی بھی دن ہونے کا تصور بھی نہیں کیا تھا۔ ہر روز یا تو وہ اے ٹی ایم کی قطار یا بینک کی قطار میں کھڑے ہورہے ہیں۔ وہ محنت کش طبقہ سے تعلق رکھتے ہیں اور نقد رقم کی قلت کی وجہ سے ان کی معیشت تباہ ہوگئی ہے۔ کرلا کے ایک تاجر دیپک جین نے جو زیورات کی دکان چلاتا ہے، کہا کہ وہ چاہتے ہیں کہ نیشنلائز بینک سے 40,000 روپئے کی رقم حاصل کریں لیکن انہیں صرف 15,000 روپئے ہی دیئے جارہے ہیں جبکہ کرنٹ اکاؤنٹ سے ایک ہی وقت میں 50,000 روپئے حاصل کئے جاسکتے ہیں۔ ایک سینئر سٹیزن ہزاری لال کلاری جنہوں نے جنرل پوسٹ آفس جنوبی ممبئی سے رقم حاصل کی ہے، وہاں کے انتظامات سے مطمئن نظر آئے۔ اندھیری کے سونو شکلا نے جو تقاریب کے منتظمین میں سے ایک ہے، کہا کہ حکومت کے نقد رقم کے بغیر معیشت کے نظریہ کی وجہ سے تقاریب کا انعقاد نہیں ہورہا ہے اور اگر ہورہا ہے تو بھی انتہائی سادگی سے ہورہا ہے۔

TOPPOPULARRECENT