Thursday , August 24 2017
Home / جرائم و حادثات / بینکوں کو لوٹنے والی ٹولی گرفتار

بینکوں کو لوٹنے والی ٹولی گرفتار

فلم بنانے کے لیے رقمی ضرورت پوری کرنے اے ٹی ایم بھی نشانہ
حیدرآباد ۔ 22 ۔ دسمبر : ( سیاست نیوز ) : سائبر آباد پولیس نے سلسلہ وار بینک ڈکیتی وارداتوں میں ملوث ٹولی کو بے نقاب کردیا اور اس ٹولی کے اصل سرغنہ مروگن کے علاوہ دیگر دو افراد کو گرفتار کرلیا ۔ بتایا جاتا ہے کہ فلموں کی تیاری کے لیے رقمی ضرورت پوری کرنے کے لیے یہ ٹولی بینکس کو لوٹا کرتی تھی ۔ یہ بات کمشنر پولیس سائبر آباد مسٹر سی وی آنند نے بتائی ۔ جو آج یہاں ایک پریس کانفرنس کو مخاطب تھے ۔ انہوں نے مروگن ٹولی کے قبضہ سے ضبط شدہ رقم اور تفصیلات کو میڈیا کے روبرو پیش کیا ۔ انہوں نے بتایا کہ اس ٹولی نے بالا نگر ضلع محبوب نگر اور ضلع چتور کے علاوہ جاریہ سال گھٹکیسر میں بینک کے اے ٹی ایم کو لوٹا تھا اور اس دوران اس ٹولی نے سائبر آباد پولیس کی چوکسی کو دیکھتے ہوئے اپنی گاڑی چھوڑ کر فرار اختیار کرلی تھی ۔ اس بنیاد پر پولیس نے تحقیقات کے بعد مروگن کو اپنی حراست میں لے لیا اور پروڈکشن وارنٹ کی مدد سے مروگن کو تحویل میں لیتے ہوئے ساری تفصیلات تحقیقات کے دوران حاصل کی ۔ کمشنر پولیس سائبر آباد مسٹر سی وی آنند نے بتایا کہ پولیس نے ایک کروڑ 70 لاکھ روپئے مالیتی نقد رقم اور طلائی زیورات کو ضبط کرلیا اور اس رقم میں جلی ہوئی کرنسی نوٹ بھی پائے جاتے ہیں ۔ جو گھٹکیسر اے ٹی ایم کو جلانے کے دوران جل چکے تھے ۔ کمشنر پولیس نے بتایا کہ پولیس نے مروگن کے علاوہ دیناکرن اور ہریش کو کانچی پورم ضلع ریاست تاملناڈو سے گرفتار کرلیا ۔ کمشنر پولیس نے بتایا کہ مروگن نے ششی کے ذریعہ ایک تلگو فلم بھی تیار کرلی تھی جو مکمل ہوچکی ہے اور اس فلم کے لیے ایک کروڑ سے زائد بجٹ کو صرف کیا گیا ۔ مروگن پروڈیوسر تھا اور سریش نے ہیرو کا رول ادا کیا ۔ اس طرح انہوں نے ’ منسا ونیاوا ‘ نامی فلم تیار کرلی اور اس کے افتتاح کے لیے اعلیٰ پولیس اور ریونیو کے عہدیداروں کو طلب کیا گیا تھا ۔ مسٹر سی وی آنند کمشنر پولیس سائبر آباد نے بتایا کہ سال 2010 میں بنگلور پولیس نے مروگن کو گرفتار کرتے ہوئے جیل منتقل کیا تھا جو تقریبا 25 واقعات میں ملوث بتایا گیا ۔ سال 2011 میں جیل سے رہائی کے بعد مروگن شمس آباد منتقل ہوا اور یہاں ایک ڈیلکس مکان خریدا اور تلگو فلم انڈسٹری کے افراد سے تعلقات بنائے ۔ پولیس نے بتایا کہ انوا کو ضبط کرنے کے بعد اسپیشل ٹیم کے ذریعہ پولیس نے اس ریاکٹ کو بے نقاب کیا اور مزید تحقیقات جاری ہیں ۔ اس موقع پر پولیس کے دیگر اعلیٰ عہدیدار موجود تھے ۔۔

TOPPOPULARRECENT