Monday , September 25 2017
Home / ہندوستان / بیٹے کے گناہوں کو نظر انداز کردینے پر والدین کے خلاف کیس

بیٹے کے گناہوں کو نظر انداز کردینے پر والدین کے خلاف کیس

مظفر نگر ۔ 23 ۔ مارچ : ( سیاست ڈاٹ کام ) : پور قاضی ٹاون میں ایک نوجوان نے ایک 17 سالہ لڑکی کی عصمت ریزی کردی اور اس حرکت کی فلمبندی کرلی ۔ اس لڑکی کو نوجوان نے 13 مارچ کو اپنی بہن کے مکان لے گیا جہاں پر 25 سالہ نوجوان نے عصمت ریزی کردی ۔ متاثرہ لڑکی کے والد نے پولیس میں یہ شکایت درج کروائی ہے ۔ پولیس نے بتایا کہ یہ واقعہ جس وقت پیش آیا تھا اس وقت مکان میں خاندان کے دیگر ارکان موجود تھے ۔ ایس پی سٹی کی ہدایت پر ندیم ، اس کی بہن رخسانہ ، والد اکرم ، چاچا کامل اور والدہ سروری کے خلاف قانون تعزیرات ہند کے مختلف دفعات کے تحت کیس درج کرلیا گیا اور مفرور ملزمین کی تلاش شروع کردی ۔ دریں اثناء ایک اور واقعہ میں ایک 30 سالہ خاتون کی سرجو گاؤں میں اس کے مکان ایک نوجوان نے کل عصمت ریزی کردی ۔ پولیس نے 30 سالہ نوجوان زاہد کو گرفتار کر کے کیس درج کرلیا ہے ۔اس واقعہ کو انتہائی افسوسناک بتایا جارہا ہے کیونکہ والدین نے اپنی اولاد کو لذت گناہ سے نہیں روکا اور اس جرم کی پردہ پوشی کی جس کے نتیجہ میں نوجوانوں میں اخلاقی برائیاں پیدا ہورہی ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT