Saturday , September 23 2017
Home / شہر کی خبریں / بی آر امبیڈکر اوپن یونیورسٹی میں اردو میڈیم ڈگری کورسیس کو بحال کرنے کا تیقن

بی آر امبیڈکر اوپن یونیورسٹی میں اردو میڈیم ڈگری کورسیس کو بحال کرنے کا تیقن

محمد علی شبیر کی وزیر تعلیم سے وضاحت طلبی پر وائس چانسلر سے بات چیت ، ترجمہ کیلئے مانو سے یادداشت مفاہمت
حیدرآباد ۔ 19۔ جولائی (سیاست نیوز) ڈپٹی چیف منسٹر و وزیر تعلیم کڈیم سری ہری نے قائد اپوزیشن قانون ساز کونسل محمد علی شبیر کو یقین دلایا کہ بی آر امبیڈکر اوپن یونیورسٹی میں اردو میڈیم گریجویشن کورسس کی بحالی کو یقینی بنایا جائے گا اور وہ اس سلسلہ میں وائس چانسلر یونیورسٹی سے رپورٹ حاصل کر رہے ہیں۔ محمد علی شبیر نے اس مسئلہ پر آج کڈیم سری ہری سے ربط قائم کیا اور انہیں اردو داں طبقہ میں پھیلی بے چینی سے واقف کرایا ۔ انہوں نے کہا کہ یونیورسٹی نے جاریہ سال اچانک اردو میڈیم امتحانات روک دینے کا فیصلہ کیا ہے جبکہ گریجویشن کورسس میں داخلہ کیلئے انٹرنس امتحان منعقد کیا گیا جس میں کوالیفائی امیدواروں کی فہرست بھی جاری کی گئی۔ داخلہ کے مرحلہ سے عین قبل یونیورسٹی نے تلگو اور انگریزی میڈیم کو برقرار رکھا اور اردو میں داخلوں کو روک دیا گیا۔ محمد علی شبیر نے کہا کہ ایک طرف حکومت اردو زبان کو ترقی دینے کا دعویٰ کرتی ہے تو دوسری طرف یونیورسٹی حکام نے اردو کے ساتھ ناانصافی کی ہے۔ اس فیصلہ سے نہ صرف حکومت کی بدنامی ہوگی بلکہ اقلیتی طلبہ کا تعلیمی مستقبل تاریک ہوجائے گا جو اوپن یونیورسٹی کے ذریعہ گریجویشن اور پوسٹ گریجویشن کی تکمیل کے خواہاں ہیں۔ کڈیم سری ہری نے محمد علی شبیر کو یقین دلایا کہ وہ اس مسئلہ کا جائزہ لیں گے اور اردو کے ساتھ انصاف کیا جائے گا۔ انہوں نے بتایا کہ وائس چانسلر سے رپورٹ طلب کی گئی ہے تاکہ حقائق کا پتہ چلایا جاسکے۔ اسی دوران یونیورسٹی کے وائس چانسلر ڈاکٹر سیتا راما راؤ نے محمد علی شبیر کو بتایا کہ اردو میڈیم امتحانات روکنے کا فیصلہ عارضی ہے اور صرف ایک سال کے لئے اردو میڈیم داخلے بند کئے گئے ہیں ۔ وجوہات بیان کرتے ہوئے وائس چانسلر کا کہنا تھا کہ یونیورسٹی میں اردو میں نصاب تیار کرنے کیلئے عملہ موجود نہیں ہے۔ حالیہ عرصہ میں انہوں نے تین افراد کا تقرر کیا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ بی اے ، بی کام اور بی ایس سی اردو میڈیم کیلئے 1500 طلبہ نے انٹرنس ٹسٹ میں حصہ لیا ۔ وائس چانسلر نے کہا کہ جاریہ سال اردو نصابی کتب کی تیاری کا کام مکمل کرلیا جائے گا اور ضرورت پڑنے پر زائد اسٹاف کی خدمت حاصل کی جائے گی اور آئندہ سال سے اردو امتحانات بحال ہوجائیں گے ۔ سیتاراما راؤ نے بتایا کہ نصابی کتب کی تیاری کے سلسلہ میں مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی سے یادداشت مفاہمت کی گئی ہے، لہذا آئندہ سال سے امتحانات میں کوئی رکاوٹ نہیں ہوگی۔ وائس چانسلر نے اردو داں طبقہ سے اپیل کی کہ وہ یونیورسٹی کے حالات کو سمجھتے ہوئے تعاون کریں تاکہ آئندہ سال سے اردو سیکشن کو مضبوط کیا جاسکے۔

TOPPOPULARRECENT