Friday , August 18 2017
Home / سیاسیات / بی ایس پی لیڈر جگل کشور کی بی جے پی میں شمولیت

بی ایس پی لیڈر جگل کشور کی بی جے پی میں شمولیت

مایاوتی پر دلت کی بیٹی نہیں دولت کی بیٹی بن جانے کا الزام
نئی دہلی۔/15جنوری، ( سیاست ڈاٹ کام ) بہوجن سماج پارٹی کے ایم پی مسٹر جگل کشور نے آج بی جے پی میں شمولیت اختیار کرلی۔ جس پر زعفرانی پارٹی نے یہ ادعا کیا ہے کہ اتر پردیش میں دلتوں کو رجھانے کیلئے راہ ہموار ہوگی جہاں پر آئندہ سال اسمبلی انتخابات منعقد ہونے والے ہیں۔ اس موقع پر بی جے پی کے ریاستی صدر مسٹر لکشمی کانت باجپائی نے کہا کہ جگل کشور کی شمولیت سے دلتوں کو پارٹی سے جوڑنے میں مدد ملے گی کیونکہ سابق بی ایس پی لیڈر میں تنظیمی صلاحیتیں بدرجہ اتم پائی جاتی ہیں۔ انہوں نے تلسنکرات کے موقع پر جگل کشور کی پارٹی میں شمولیت کو خوش آئند قرار دیا اور بتایا کہ یہ تبدیلی آج مایاوتی کیلئے سالگرہ کا تحفہ ثابت ہوگی۔ مسٹر جگل کشور کو جوکہ بی ایس پی کے بانی رکن اور دلت طبقہ کے نمائندہ ہیں یہ الزام عائد کیا کہ مایاوتی دلتوں کے ووٹوں پر سودے بازی کرتی ہیں اس کے برعکس دلتوں کی خواہشات کی تکمیل کیلئے بی جے پی سرگرم عمل ہے۔انہوں نے یہ ریمارک کیا کہ مایاوتی اب دلت کی بیٹی نہیں رہیں بلکہ دولت کی بیٹی بن گئی ہیں جوکہ دلتوں کے ووٹوں پر سودے بازی کرتی ہیں۔ راجیہ سبھا ایم پی نے کہا کہ وہ بی ایس پی کے قیام سے ہی وابستہ ہیں جس کا قدیم نام BS4  ’ بھارتی سوشلسٹ، سماج سنگھرش سنگھٹن ‘ تھا۔ بعد ازاں کانشی رام نے اس تنظیم کو بی ایس پی میں تبدیل کردیا لیکن مایاوتی کی قیادت میں یہ پارٹی اپنے نظریات سے منحرف ہوگئی ہے۔ بی جے پی لیڈر مسٹر اوم پرکاش ماتھر جو کہ اترپردیش میں پارٹی اُمور کے انچارج ہیں بتایا کہ عوام نے بی جے پی کے حق میں ووٹ ڈالنے کا فیصلہ کرلیا ہے جس طرح لوک سبھا کے انتخاب میں ووٹ دیا تھا۔ تاہم جگل کشور نے وزیر اعظم نریندر مودی اور پارٹی سربراہ امیت شاہ کی ستائش کی اور یہ ادعا کیا کہ آر ایس ایس دلتوں کی ترقی چاہتی ہے۔

TOPPOPULARRECENT