Friday , August 18 2017
Home / سیاسیات / بی جے پی امن پسند جماعت، راج ٹھاکرے کٹر فرقہ پرست

بی جے پی امن پسند جماعت، راج ٹھاکرے کٹر فرقہ پرست

مہاراشٹرا کے وزیر ریونیو ایکناتھ کھڈسے کا جوابی الزام

ممبئی 12 اگسٹ (سیاست ڈاٹ کام) ممبئی میں 1993 ء کے سلسلہ وار بم دھماکوں کے ملزم یعقوب میمن کو پھانسی پر مہاراشٹرا نو نرمان سینا سربراہ راج ٹھاکرے کی جانب سے بی جے پی کیخلاف تنقیدوں پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے ریاستی وزیر مالگذاری مسٹر ایکناتھ کھڈسے نے آج کہاکہ مہاراشٹرا میں ہر کوئی جانتا ہے کہ اشتعال انگیز تقاریر کون کرتے ہیں۔ ٹھاکرے کے ریمارکس پر تبصرہ کی خواہش پر ریاستی وزیر نے کہاکہ مہاراشٹرا میں ہر کوئی جانتا ہے کہ کس کی اشتعال انگیز تقاریر سے صورتحال کشیدہ ہوجاتی ہے اور بی جے پی اس طرح کی تقاریر کی حمایت نہیں کرتی کیوں کہ وہ ایک امن پسند جماعت ہے۔ انھوں نے بتایا کہ تاریخ شاہد ہے کہ ہمارے کسی بھی لیڈر نے تقاریر کے ذریعہ عوام کے جذبات کو مشتعل کئے ہوں اور نہ اس طرح کی ذہنیت کے افراد کی حوصلہ افزائی کی جاتی ہے۔ جبکہ راج ٹھاکرے کا یہ وطیرہ رہا کہ اشتعال انگیز تقاریر کے ذریعہ عوام کے جذبات بھڑکائے جائیں۔

واضح رہے کہ راج ٹھاکرے نے تھانے میں ایک جلسہ کو مخاطب کرتے ہوئے یہ الزام لگایا کہ بی جے پی زیرقیادت مرکزی اور ریاستی حکومتیں یعقوب میمن کو پھانسی دینے کے واقعہ کو ڈرامائی شکل دے دی تاکہ اس واقعہ سے سیاسی فائدہ اُٹھایا جاسکے۔ ایسا محسوس ہوتا ہے کہ ملک کو تقسیم کرنے کیلئے پارٹی نے فساد جیسی صورتحال پیدا کرنے کی کوشش کی۔ انھوں نے یہ بھی الزام عائد کیا تھا کہ بی جے پی ایک بدعنوان پارٹی بن گئی ہے اور اس کی حکومت اور پیشرو کانگریس این سی پی حکومت میں کوئی فرق نہیں رہا۔ جس پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے وزیر ریونیو مسٹر ایکناتھ کھڈسے نے ایم این ایس سربراہ کو چیلنج کیاکہ حکومت میں بدعنوانیوں اور دھاندلیوں کا ثبوت پیش کریں اور صرف بیان بازی نہ کریں اور حکومت ان کے الزامات کی تحقیقات کروانے کیلئے آمادہ ہے۔ انھوں نے کہاکہ راج ٹھاکرے نے انتخابات میں شکست سے مایوسی پر حوصلہ بلند کرنے بے بنیاد الزامات عائد کئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT