Thursday , October 19 2017
Home / سیاسیات / بی جے پی ایم پیز کو کالیا چک کے دورہ سے روکدیا گیا

بی جے پی ایم پیز کو کالیا چک کے دورہ سے روکدیا گیا

مالڈا اسٹیشن سے واپس چلے جانے کی ہدایت ۔ امتناعی احکام کا حوالہ

مالڈا ( مغربی بنگال ) 11 جنوری ( سیاست ڈاٹ کام ) مغربی بنگال میں کالیا چک کے مقام پر 3 ڈسمبر کو پیش آئے پرتشدد واقعات پر حقائق کا پتہ لگانے پہونچی بی جے پی کی ایک ٹیم کو ضلع انتظامیہ نے مقام واقعہ کا دورہ کرنے سے روک دیا ۔ اس واقعہ پر ممتابنرجی کی حکومت اور بی جے پی کے مابین سیاسی اختلافات میںشدت پیدا ہوگئی ہے ۔ بی جے پی کے ارکان پارلیمنٹ بھوپیندر یادو ‘ رام ولاس ویدانتی اور ایس ایس اہلوالیہ گور ایکسپریس سے مالڈا ٹاؤن اسٹیشن پر آج صبح 6 بجے جیسے ہی اترے پولیس اور ضلع انتظامیہ نے ان سے کہا کہ وہ واپس چلے جائیں کیونکہ کالیا چک میںامتناعی احکام نافذ ہیں ۔ رکن پارلیمنٹ بھوپیندر یادو نے کہا کہ مغربی بنگال حکومت کا یہ اقدام قابل مذمت ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ارکان پارلیمنٹ کو ہوڑہ سے چلنے والی شتابدی ایکسپریس کے ذریعہ واپس ہونے پر مجبور کردیا گیا ۔ارکان پارلیمنٹ اسٹیشن کے وی آئی پی لاؤنچ میں تقریبا تین گھنٹوں تک رہے اور وہاں انہوں نے سینئر ضلع عہدیداروں کے ساتھ تبادلہ خیال کیا ۔ ریاست سے تعلق رکھنے والے بی جے پی کے واحد رکن پارلیمنٹ ایس ایس اہلوالیہ نے کہا کہ اس دورہ کا مقصد عوام کو تسلی دینا تھا ان میں یہ اعتماد پیدا کرنا تھا کہ اس طرح کے واقعات کا مستقبل میں اعادہ نہیں ہوگا ۔ ریاستی حکومت کے دباؤ کی وجہ سے ضلع انتظامیہ نے ہم سے کہا کہ ہم وہاں نہیںجاسکتے کیونکہ وہاں دفعہ 144 نافذ ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم یہاں اس لئے نہیں آئے ہیںکہ کسی کو اکسایا جائے یا اشتعال دلایا جائے ۔ ہم قانون کی پابندی کرنے والے شہری اور سینئر ارکان پارلیمنٹ ہیں لیکن عہدیداروں کا کہنا تھا کہ ہم عوامی شخصیتیں ہیں اور ہماری آمد یا موجودگی سے مسائل پیدا ہونگے ۔ جو عام حالات انہوں نے کافی محنت کے بعد بحال کئے ہیں وہ متاثر ہوسکتے ہیں۔ تینوں قائدین نے کہا کہ وہ صرف یہ جاننا چاہتے تھے کہ وہ کیا واقعات تھے جن کی بنیاد پر کالیا چک میں تشدد پھوٹ پڑآ تھا ۔ تاہم اس واقعہ کے بعد سے ہی علاقہ میں بی جے پی قائدین کے داخلہ کو روک دیا گیا تھا ۔ مغربی بنگال اسمبلی میں بی جے پی کے واحد رکن مسٹر شامک بھٹا چاریہ کی قیادت میں بھی ایک بی جے پی وفد کو پہلے کالیا چک گاؤں کا دورہ کرنے سے روک دیا گیا تھا ۔ واضح رہے کہ کالیاچک میں 3 ڈسمبر کو ایک بی جے پی لیڈر کے ریمارک پر تشدد پیدا ہوگیا تھا ۔ احتجاجیوں نے ایک پولیس اسٹیشن کو نذر آتش کردیا تھا ۔

TOPPOPULARRECENT