Sunday , October 22 2017
Home / شہر کی خبریں / بی جے پی سے دوستی کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا

بی جے پی سے دوستی کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا

این ڈی اے میں ٹی آر ایس کی شمولیت کا امکان مسترد ، محمد محمود علی کی پریس کانفرنس
حیدرآباد ۔ 9۔ اگست (سیاست  نیوز) مرکز میں برسر اقتدار این ڈی اے میں ٹی آر ایس کی شمولیت یا پھر بی جے پی سے دوستی کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ سیکولر قائد ہیں اور وہ مسلم دوست چیف منسٹر ہیں۔ ٹی آر ایس کبھی بھی بی جے پی سے مفاہمت یا دوستی نہیںکرے گی۔ ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی نے آج پریس کانفرنس میں بی جے پی سے امکانی دوستی کے بارے میں قیاس آرائیوں سے متعلق سوال کا جواب دیتے ہوئے یہ بات کہی۔ محمود علی نے کہا کہ ریاست میں مختلف ترقیاتی اور فلاحی اسکیمات پر عمل آوری کیلئے مرکز کا تعاون ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کے آشیرواد کے بغیر تلنگانہ حکومت کئی اہم پراجکٹس کی تکمیل نہیں کرسکتی۔ لہذا چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ مرکز سے تعلق کو استوار رکھنا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مرکز اور ریاست میں بہتر روابط اور تال میل کے ذریعہ ہی ترقی حاصل کی جاسکتی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ تلنگانہ نئی ریاست ہے اور اس کی تشکیل کو دو سال تین ماہ مکمل ہوئے ہیں۔ ریاست کی ہمہ جہتی ترقی اور نئے پراجکٹس کی تکمیل کیلئے چیف منسٹر مرکز سے فنڈس حاصل کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مرکز میں بی جے پی اور تلنگانہ میں ٹی آر ایس کو واضح اکثریت حاصل ہے۔ لہذا ایک دوسرے کی تعریف کی ضرورت نہیں۔ شہر کو گوداوری سے پانی کی سربراہی ، مشن بھگیرتا اور دیگر ترقیاتی پراجکٹس کا حوالہ دیتے ہوئے ڈپٹی چیف منسٹر نے کہا کہ ان کی تکمیل مرکز کے تعاون کے بغیر ممکن نہیں ہے ۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کے حالیہ دورہ کے موقع پر دونوں قائدین کی ایک دوسرے کے حق میں تعریف کا مطلب بعض گوشوں کی جانب سے غلط نکالا جارہا ہے۔ ٹی آر ایس اور بی جے پی میں دوستی کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔ واضح رہے کہ وزیراعظم کے حالیہ دورہ گجویل کے موقع پر چیف منسٹر نے نریندر مودی سے تلنگانہ کیلئے پیار اور آشیرواد کی درخواست کی تھی، جس کے بعد سے سیاسی حلقوں میں دونوں پارٹیوں کی قربت کے بارے میں خبریں گشت کرنے لگیں۔

TOPPOPULARRECENT