Wednesday , July 26 2017
Home / شہر کی خبریں / بی جے پی قائدین کو رویہ میں تبدیلی نہ لانے پر سخت انتباہ

بی جے پی قائدین کو رویہ میں تبدیلی نہ لانے پر سخت انتباہ

حیدرآباد۔/13 مئی، ( سیاست نیوز) ٹی آر ایس کے رکن قانون ساز کونسل کے پربھاکر نے بی جے پی قائدین کو متنبہ کیا کہ اگر وہ اپنے رویہ میں تبدیلی نہ لائیں تو عوام انہیں سبق سکھانے پر مجبور ہوجائیں گے۔ مرچ کسانوں کے مسائل پر بی جے پی کی جانب سے ٹی آر ایس حکومت کو نشانہ بنائے جانے کی پربھاکر نے شدید مذمت کی۔ میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے مرکزی وزیر بنڈارودتاتریہ کی جانب سے حکومت کے خلاف کئے گئے ریمارکس کی مذمت کی اور کہا کہ مرچ کے کسانوں کو امدادی قیمت کا تعین کرنا مرکزی حکومت کا کام ہے لیکن بنڈارودتاتریہ ریاستی حکومت کو ذمہ دار قرار دینے کی کوشش کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مرکز نے فی کنٹل 5 ہزار روپئے کا اعلان کیا جبکہ تلنگانہ حکومت 7 ہزار روپئے ادا کرتے ہوئے کسانوں کا تحفظ کررہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کسانوں کے مسئلہ پر حکومت کو بدنام کرنے کیلئے بی جے پی قائدین نے مہم چھیڑ رکھی ہے اور افسوس کہ مرکزی وزیر بنڈارودتاتریہ اس مہم میں شامل ہوچکے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مرچ کے کسانوں کے مسائل اور امدادی قیمت جیسے اُمور سے بی جے پی قائدین لاعلم ہیں اور دیگر جماعتوں کی طرح صرف حکومت پر تنقید کو اپنا شیوہ بناچکے ہیں۔ انہوں نے ریمارک کیا کہ بی جے پی قائدین کا کسانوں کے ساتھ یہ حال ہے جیسے کسی کو پیاس بجھانے کیلئے باؤلی کھودنے کا مشورہ دیا جائے۔ دتاتریہ جیسے سادہ لوح اور سینئر سیاستداں کی جانب سے اس طرح کے بیانات افسوسناک ہیں۔ بی جے پی قائدین کو کسانوں کے مسئلہ پر اپنی دلچسپی کا ثبوت دینے کیلئے حکومت پر تنقیدوں کے بجائے مرکز سے نمائندگی کرنی چاہیئے۔ انہوں نے کہا کہ اس طرح کے بیانات سے کسان مایوس ہوکر خودکشی کیلئے مجبور ہوجائیں گے۔ ہونا تو یہ چاہیئے کہ تمام جماعتوں کو مل کر کسانوں کا حوصلہ بڑھانا چاہیئے اور ان کی مدد کیلئے مرکز سے نمائندگی کی جانی چاہیئے۔ کسانوں کو فائرنگ کا نشانہ بنانے والی تلگودیشم پارٹی آج کسانوں سے جھوٹی ہمدردی کررہی ہے۔ بشیر باغ پر تلگودیشم دور حکومت میں کسانوں پر فائرنگ کی گئی تھی۔ پربھاکر نے کھمم میں مرچ کسانوں کو ہتھکڑی لگانے کے واقعہ کی مذمت کی اورکہا کہ حکومت نے فوری طور پر کارروائی کرتے ہوئے خاطی پولیس عہدیداروں کو معطل کردیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ سابق میں کسی بھی حکومت نے اس طرح فوری کارروائی نہیں کی تھی۔ انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر کے مشورہ پر حکومت کے تمام وزراء اضلاع میں قیام کرتے ہوئے کسانوں کے مسائل کے حل کیلئے اقدامات کررہے ہیں جبکہ اپوزیشن جماعتیں حیدرآباد میں بیٹھ کر کسانوں سے جھوٹی ہمدردی دکھارہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کسانوں کی بھلائی کے حق میں ٹی آر ایس حکومت نے جو اقدامات کئے ہیں اس کی مثال متحدہ آندھرا کی کوئی حکومت حتیٰ کہ ملک کی کوئی اور ریاست پیش نہیں کرسکتی۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT