Saturday , September 23 2017
Home / ہندوستان / بی جے پی لیڈروں کے قتل کیس میں 10 ملزمین کے خلاف چارج شیٹ پیش

بی جے پی لیڈروں کے قتل کیس میں 10 ملزمین کے خلاف چارج شیٹ پیش

پاکستان اور جنوبی افریقہ میں سازشی عناصر روپوش ، خصوصی عدالت میں این آئی اے کا انکشاف
احمدآباد ۔ 7 مئی ۔(سیاست ڈاٹ کام) قومی تحقیقاتی ادارہ ( این آئی اے ) نے بھروچ میں بی جے پی لیڈروں کے دوہرے قتل کیس میں 10 ملزمین کے خلاف آج خصوصی عدالت میں چارج شیٹ پیش کردیا ہے اور ادعا کیا کہ یہ ہلاکتیں دراصل ایک وسیع سازش کاحصہ ہے جس میں ماخوذ شریک مجرمین پاکستان اور جنوبی آفریقہ میں قیام پذیر ہیں۔ خصوصی این آئی اے عدالت کے پرنسپال جج پی بی دیسائی کے روبرو پیش کردہ چارج شیٹ کے مطابق یہ کیس 2 افراد کے قتل سے متعلق گہری سازش کا حصہ ہے جس میں ملوث شریک مجرمین بیرونی ممالک میں مقیم ہیں۔ سازشی عناصر نے یہ قتل ، ایک مخصوص فرقہ کے عوام کے ذہن میں خوف و ہراس پیدا کرنے کیلئے انجام دیا تھا ۔ چارج شیٹ میں بتایاگیا کہ تحقیقات کے دوران پاکستان اور جنوبی افریقہ میں روپوش شریک مجرمین کے مبینہ رول کا پتہ چلا ہے اور ملزمین کے خلاف مزید ثبوت اکٹھا کرنے کیلئے کیس کی تحقیقات جاری ہے۔ تحقیقاتی ایجنسی نے بتایا کہ گرفتار مزید 2 ملزمین عبدالصمد اور ناصر خاں پٹھان کے خلاف بہت جلد چارج شیٹ پیش کی جائیگی

جبکہ آج دیگر ملزمین سید عمران ، زہیب انصاری ، عنایت پٹیل ، محمد یونس ، حیدر علی ، نثار بھائی شیخ ، محسن خان پٹھان ، محمد الطاف شیخ ، عابد پٹیل اور عبدالسلیم گھانچی کے خلاف فرد جرم عائد کیا گیا ۔ سابق بی جے پی صدر بھروچ اور سینئر آر ایس ایس رکن سریش بنگالی اور جنرل سکریٹری بھارتیہ جنتا یووا مورچہ پرگنیش میستری کو نامعلوم بندوق برداروں نے گزشتہ سال 2 نومبر کو گولی مارکر ہلاک کردیا تھا ۔ سرکاری وکیل گیتا گودامی نے بھی عدالت میں 3 عرضیاں پیش کرتے ہوئے بعض گواہوں کی شناخت اور اہم دستاویزات کی تفصیلات پوشیدہ رکھنے اور گواہوں کو این آئی کی حفاظت کیلئے اجازت طلب کی ہے ۔ انھوں نے عدالت کو بتایا این آئی اے ازخود بعض گواہوں کو تحفظ فراہم کرنا چاہتی ہے لیکن اس خصوص میں عدالت کی اجازت کی خواہشمند ہے ۔ جس پر عدالت نے تمام درخواستوں کو منظوری دیدی ۔ بی جے پی لیڈروں کے دوہرے قتل کے سلسلہ میں جملہ 12 ملزمین کو گرفتار کیا گیا اور ان کے خلاف قانون غیرقانونی سرگرمیاں ( انسداد ) آئی پی سی ، آرمس ایکٹ گجرات پولیس کے تحت کیس درج کئے گئے ۔ خصوصی عدالت نے گزشتہ سال ڈسمبر میں چارج شیٹ پیش کرتے ہوئے این آئی اے کو مزید مہلت دیدی تھی ۔ ابتداء میں بھروچ پولیس نے گجرات کے انسداد دہشت گردی دستہ ( اے ٹی ایس ) کے تعاون سے تحقیقات کی تھی اور مذکورہ ہلاکتوں کو دہشت گردانہ کارروائی قرار دیا تھا ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT