Monday , June 26 2017
Home / سیاسیات / بی جے پی متلاطم پانی میں ماہی گیر ی نہ کرے : کانگریس

بی جے پی متلاطم پانی میں ماہی گیر ی نہ کرے : کانگریس

قانونی ماہرین کی اکثریتی تائید والے قائد کو چیف منسٹر بنانے کی رائے
نئی دہلی۔ 14 فروری (سیاست ڈاٹ کام) کانگریس نے آج بی جے پی سے کہا کہ وہ ٹاملناڈو کے متلاطم پانی میں ماہی گیری کی کوشش ترک کردے اور گورنر سے مطالبہ کیا کہ وہ فوری اسمبلی کا خصوصی اجلاس طلب کرے تاکہ پتہ چلایا جاسکے کہ ایوان اسمبلی میں اکثریت کی تائید کسے حاصل ہے۔ سپریم کورٹ کے فیصلہ کا خیرمقدم کرتے ہوئے کانگریس کے ترجمان اعلیٰ رندیپ سرجے والا نے کہا کہ قانون اور دستور کو غالب رہنا چاہئے۔ دریں اثناء ماہرین قانون نے رائے دی ہے کہ ٹاملناڈو میں گورنر کو چاہئے کہ ایسے قائد کو چیف منسٹر بنائے جسے اکثریت کی تائید حاصل ہو۔ پلانی سوامی نے 124 ارکان اسمبلی کی تائید حاصل ہونے کا دعویٰ کیا ہے، پھر گورنر ان کی تقریب حلف برداری میں تاخیر کیوں کررہے ہیں۔ دریں اثناء سپریم کورٹ نے اپنے فیصلے میں ششی کلا اور دیگر دو افراد پر فردِ جرم عائد کرتے ہوئے کہا کہ سابق چیف منسٹر آنجہانی جیہ للیتا اور ششی کلا کے بینک کھاتوں کی تعداد میں گھاس پھوس کی طرح اضافہ ہوا ہے جس کا مقصد صرف یہی تھا کہ غیرمحسوب رقم کو دوسروں کے نام منتقل کردیا جائے۔ سپریم کورٹ نے اپنے فیصلے میں کہا کہ یہ سازش سابق چیف منسٹر جیہ للیتا کے دورِ حکومت میں ان کی قیام گاہ پوئس گارڈن پر رچی گئی تھی۔ ششی کلا اور ان کے دو ساتھی وی این سدھاکرن اور سابق چیف منسٹر جیہ للیتا کے متبنٰی بیٹے کے علاوہ ششی کلا کے بڑے بھائی کی بیوی فلاوا راسی بھی پوئس گارڈن پہنچی تھیں اور اس سازش میں وہ بھی شریک تھے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT