Wednesday , August 23 2017
Home / سیاسیات / بی جے پی نے بہار شکست سے سبق نہیں سیکھا

بی جے پی نے بہار شکست سے سبق نہیں سیکھا

زبان دراز قائدین کے خلاف معمولی کارروائی سے بھی گریز : کانگریس
نئی دہلی 10 نومبر ( سیاست ڈاٹ کام ) بی جے پی اور وزیر اعظم نریندر مودی نے بہار اسمبلی انتخابات میں زبردست شکست سے کوئی سبق نہیں سیکھا ہے ۔ کانگریس پارٹی نے آج یہ الزام عائد کیا اور کہا کہ بی جے پی یا وزیر اعظم نے اپنی پارٹی کے زبان دراز عناصر کے خلاف معمولی کارروائی تک نہیں کی ہے اور نہ کسی کو ایک گھنٹے کیلئے بھی معطل کیا گیا ہے ۔ کانگریس کے ترجمان ابھیشیک مانو سنگھوی نے اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ یہ سب کچھ عوام کو بیوقوف بنانے کی سیاست ہے ۔ کوئی بہتر کارروائی نہیں کی گئی ہے ۔ نہ کسی کو خارج کیا گیا ہے اور نہ کسی کو معطل ہی کیا گیا ہے ۔ کسی بھی زبان دراز کو ایک گھنٹے کیلئے بھی معطل نہیں کیا گیا ہے ۔ بہار میں پارٹی کو جو شکست ہوئی ہے اس سے پارٹی یا نریندر مودی نے کوئی سبق نہیں سیکھا ہے ۔ یہ واضح کرتے ہوئے کہ بی جے پی اور آر ایس ایس کے ایسے قائدین کی ایک طویل فہرست ہے جنہوں نے گذشتہ 18 مہینوںکے دوران متنازعہ بیانات دئے ہیں انہوں نے کہا کہ ان میں ونئے کٹیار ‘ موہن بھاگوت ‘ ساکشی مہاراج ‘ گری راج سنگھ اور کیلاش وجئے ورگیہ بھی شامل ہیں۔ شتروگھن سنہا کے معاملہ کا حوالہ دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یہ تشویش کی بات ہے کہ وجئے ورگیہ کے خلاف خود بی جے پی کے ایک لیڈر کے خلاف ریمارکس کرنے پر بھی کوئی کارروائی نہیں کی گئی حالانکہ ان کے ریمارکس سے ایک تنازعہ پیدا ہوگیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں جو کچھ ہو رہا ہے وہ صرف دھوکہ کی سیاست ہے کیونکہ وزیر اعظم کہتے کچھ ہیں اورکرتے کچھ ہیں۔ ان کا اصل مقصد اپنے مخصوص طبقہ کو اور آر ایس ایس کو خوش کرنا ہے اور آر ایس ایس کے ہاتھ میں وزیر اعظم کا ریموٹ کنٹرول ہے ۔

TOPPOPULARRECENT