Sunday , May 28 2017
Home / Top Stories / بی جے پی پر ہندوتوا کو بدنام کرنے ممتابنرجی کا الزام

بی جے پی پر ہندوتوا کو بدنام کرنے ممتابنرجی کا الزام

بھوبنیشور ۔ 19 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) مغربی بنگال کی چیف منسٹر ممتابنرجی نے تمام علاقائی جماعتوں پر زور دی ہیں کہ بہتر وفاقیت کو یقینی بنانے کیلیء وہ متحدہ طور پر کام کریں۔ انہوں نے بی جے پی پر الزام عائد کیا کہ وہ ہندوتوا کو بدنام کرنے کیلئے انتشار پسندانہ سیاست میں ملوث ہورہی ہے۔ ترنمول کانگریس کی صدر ممتابنرجی نے اڈیشہ کے شہر پوری میں اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ’’ہماری مساعی یہ ہوگی کہ ملک میں بہتر وفاقیت کیلئے تمام علاقائی جماعتیں متحدہ و مشترکہ طور پر کام کریں۔ انہیں مضبوط ہونا چاہئے‘‘۔ ممتابنرجی نے جو اڈیشہ کے تین روزہ دورہ پر کل رات یہاں پہنچی ہیں۔ بی جے پی کی سخت مذمت کرتے ہوئے اس پر انتشار پسندی کی سیاعت میں ملوث ہونے کا الزام عائد کیا۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ ’’وہ (بی جے پی) مذہب ذات پات اور علاقہ کے نام پر ملک تقسیم کرنا چاہتے ہیں۔ مسلمانوں کے خلاف ہندوؤں کو اکساتے ہیں اور ہندوؤں کے خلاف عیسائیوں کو اشتعال دلاتے ہیں۔ اڑیسہ عوام کو بنگالیوں کے خلاف اور بنگالیوں کو بہاریوں کے خلاف اکساتے ہیں۔ یہ ہنددو ازم نہیں ہے‘‘۔ ممتابنرجی نے دعویٰ کیا کہ وہ حقیقی ہندو ہیں جو سب کو ساتھ لیکر چلنے پر یقین رکھتی ہیں لیکن دوسروں کے تئیں بی جے پی کا رویہ قابل قبول نہیںہے۔ ممتابنرجی نے کہا کہ ’’ان (بی جے پی) کے مطابق اڈیشہ کی حکومت بُری ہے۔ بنگال کی حکومت بُری ہے۔ بہار کی حکومت بُری ہے۔
تمام غیربی جے پی حکومتیں بُری ہیں۔ اگر سب کو ہی بُرا کہتے رہیں گے تو آپ (بی جے پی) کیسے اچھے ہوسکتی ہیں‘‘۔ ممتابنرجی نے دعویٰ کیا کہ بی جے پی اصل ہندوازم پر عمل پیرا نہیں ہے۔ انہوں نے بی جے پی ارکان کو ہندو دھرم پر بدنما داغ قرار دیا اور الزام عائد کیا کہ وہ سب کو ساتھ لیکر چلنے کے بجائے تقسیم و انتشار پیدا کررہے ہیں۔ ممتابنرجی نے کہا کہ ’’میں بھی ایک حقیقی ہندو ہوں لیکن وہ نہیں ہوں جو اس مذہب کو بدنام کررہے ہیں۔ ہندو نظریات میں سب کو ساتھ لیکر چلنے کی تلقین کی گئی ہے لیکن بی جے پی اس نظریہ کے برخلاف کام کرتے ہوئے ہندوتوا کو بدنام کررہی ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT