Thursday , August 17 2017
Home / ہندوستان / بی جے پی کا ’یوٹرن‘  آخری سانس تک ایف ڈی آئی کی مخالفت کا دعویٰ کھوکھلا

بی جے پی کا ’یوٹرن‘  آخری سانس تک ایف ڈی آئی کی مخالفت کا دعویٰ کھوکھلا

نئی دہلی ۔ 20 جون (سیاست ڈاٹ کام) مرکز میں بی جے پی حکومت نے کلیدی شعبوں میں ایف ڈی آئی کے تعلق سے ’’یوٹرن‘‘ لے لیا ہے حالانکہ جب تک یہ جماعت اپوزیشن میں تھی ایف ڈی آئی کی پوری شدت سے مخالفت کرتی رہی۔ موجودہ وزیرفینانس ارون جیٹلی نے اس وقت کہا تھا کہ بی جے پی اپنی آخری سانس تک ایف ڈی آئی کو روکنے کی کوشش کرتی رہے گی۔ ارون جیٹلی نے یو پی اے دورحکومت میں 2013ء میں رام لیلا گراونڈ پر کنفیڈریشن آف آل انڈیا ٹریڈرس کی ریالی سے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ غیرملکی راست سرمایہ کاری صارفین، کسان، تاجر، مینوفیکچرنگ شعبے اور ملک کے حق میں نہیں ہے۔ یہی وجہ ہیکہ ہم اپنی آخری سانس تک اس کی مخالفت کرتے رہیں گے۔ انہوں نے اس موقع پر شرکاء کو یقین دہانی کرائی تھی کہ بی جے پی ایف ڈی آئی کی اجازت نہیں دے گی۔ اس ریالی میں اس وقت کے بی جے پی صدر راجناتھ سنگھ (موجودہ وزیرداخلہ) اور سینئر بی جے پی لیڈر مرلی منوہر جوشی بھی موجود تھے۔ ارون جیٹلی نے اپنے موقف کا دفاع کرتے ہوئے کہا تھاکہ ایف ڈی آئی کے نتیجہ میں 60 تا 70 فیصد تجارت صرف دو یا تین کمپنیوں کے ہاتھ میں چلی جائیگی اور یہ کسانوں کیلئے انتہائی نقصاندہ ہوگا۔ کسان اپنی اشیاء کم قیمت پر ان ہی کمپنیوں کو بیچنے کیلئے مجبور ہوں گے لیکن اب ایسا لگتاہیکہ یہ سارے وعدے بی جے پی فراموش کرچکی ہے۔

TOPPOPULARRECENT