Wednesday , August 16 2017
Home / سیاسیات / بی جے پی کو تنقید سے چھٹکارا نہیں

بی جے پی کو تنقید سے چھٹکارا نہیں

بنگلورو ؍ ناگپور  13 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی کو اُس کے بہار ارکان پارلیمنٹ کی جانب سے بہار میں انتخابی ناکامی کے بعد تنقید کا سلسلہ جاری رہنے کی بناء پر ہنوز چھٹکارہ حاصل نہیں ہوا۔ ایک وزیر نتن گڈکری نے جو پارٹی کے سابق صدر ہیں، تردید کی کہ سینئر قائدین اڈوانی، جوشی، شانتا کمار اور یشونت سنہا کے خلاف تادیبی کارروائی کی جانے والی ہے جنھوں نے مودی اور شاہ پر بہار میں انتخابی ناکامی کی بناء پر تنقید کرتے ہوئے سخت بیان جاری کیا تھا۔ بہار میں انتخابی ناکامی پر پارٹی میں ناراضگی کا سلسلہ جاری ہے۔ رکن پارلیمنٹ آر کے سنگھ نے سینئر قائدین کی تائید کرتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ ناکامی کے ذمہ داروں کو جوابدہ بنایا جائے۔ سابق مرکزی معتمد داخلہ نے کہاکہ معمولی مجرموں کی گرفتاری کے لئے حکومت انعام کا اعلان کرتی ہے پھر اب خاموشی کیوں اختیار کئے ہوئے ہے۔ رکن پارلیمنٹ منوج تیواری نے جو مشرقی دہلی کی نمائندگی کرتے ہیں، بی جے پی قائدین کی تائید کرتے ہوئے بہار میں پارٹی کی انتخابی مہم پر سخت تنقید کی۔ بھوجپوری گلوکار رکن پارلیمنٹ دہلی نے کہاکہ پارٹی بی جے پی امیدواروں کی تائید کے لئے عوام کو ترغیب نہیں دے سکی۔ بہار کے کئی بی جے پی ارکان پارلیمنٹ جیسے شتروگھن سنہا، حکم دیو نارائن یادو اور بھولا سنگھ نے پارٹی کی انتخابی مہم پر شدید تنقید کی ہے اور سینئر قائدین کے خلاف تادیبی کارروائی کے اعلان کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔وینکیا نائیڈو نے کہاکہ کامیابی اور ناکامی ہوتی ہی رہتی ہے ہمیں کسی فرد یا گروپ کو اس کا ذمہ دار قرار نہیں دینا چاہئے۔ مرکزی وزیر نتن گڈکری نے غیر ذمہ دارانہ بیانات دینے والوں کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT