Wednesday , August 23 2017
Home / Top Stories / بی جے پی کے جھوٹ کے چرچے ۔ اچھے دن کا خواب چکنا چور

بی جے پی کے جھوٹ کے چرچے ۔ اچھے دن کا خواب چکنا چور

زعفرانی پارٹی سے مایاوتی کی ہم آہنگی ۔ چیف منسٹر اکھلیش یادو کا پلٹ وار
لکھنو۔ 10 اکٹوبر ۔ ( سیاست ڈاٹ کام) بہوجن سماج پارٹی کی سربراہ مایاوتی کی جانب سے مسلمانوں کو یہ مشورہ دیئے جانے پر کہ حکمراں سماج وادی پارٹی کو ووٹ دیکر ضائع نہ کریں جوکہ بی جے پی کے حق میں کارگر ثابت ہوسکتا ہے ۔ چیف منسٹر اترپردیش اکھلیش یادو نے تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہاکہ مسلمانوں کو آج بھی بی ایس پی اور بی جے پی کے درمیان سازباز یاد ہے ۔ انھوں نے بتایا کہ مایاوتی کا یہ کہنا ہے کہ سماج وادی پارٹی ایک منقسم گھر ہے اور مسلمانوں کو یہ مشورہ دیا ہے کہ حکمراں جماعت کو ووٹ نہ دیں ۔ لیکن مسلمان یہ جانتے ہیں کہ سماج وادی پارٹی ان کے کس قدر قریب ہے ۔ اور مسلمان کبھی یہ فراموش نہیں کرسکتے کہ کس نے رکھشابندھن منایا تھا اور گجرات میں بی جے پی کی مہم چلانے کیلئے کون گئے تھے ؟چیف منسٹر بظاہر مایاوتی کا تذکرہ کررہے تھے جنھوں نے بی جے پی لیڈر لال جی ٹنڈن کو راکھی باندھی تھی ۔ گجرات میں بی جے پی کیلئے اس کی مہم چلائی تھی ۔ سابقہ میں بی جے پی کے ساتھ مایاوتی کے اتحاد کا حوالہ دیتے ہوئے اکھلیش یادو نے استفسار کیا کہ آیا وہ یہ طمانیت دے سکتے ہیں کہ اگر واضح اکثریت سے حکومت تشکیل نہ دینے کی صورت میں بی جے پی کی تائید حاصل نہیں کریں گی ؟ اسمارٹ فون کی بجائے نقد رقم دینے مایاوتی کے وعدہ پر اکھلیش نے الزام عائد کیا کہ وہ رقم تقسیم کرنے میں بدنام ہیں اور رقومات بٹورنے کی عادی ہوگئی ہیںاور بی ایس پی سے مستعفی لیڈروں کا بھی الزام ہے کہ انھیں دلت سے زیادہ دولت سے پیار ہوگیا ہے ۔ چیف منسٹر نے کہا کہ ہم نے اب تک انتخابی منشور تیار نہیں کیا ہے لیکن اپوزیشن پر خوف طاری ہوگیا ہے۔ اور عوام ، بی ایس پی کے دور حکومت میں پیش آئے ڈاکٹر اور انجینئر کے قتل کو بھول نہیں سکتے اور کانشی رام کی یادگاریں تعمیر کرکے کروڑہا روپئے ضائع کردیئے گئے جب بھی مایاوتی کی ریالیاں نکلتی ہیں قیمتی جانیں تلف ہوجاتی ہیں۔ مایاوتی کے اس مطالبہ پر کہ اُترپردیش کو مزید چھوٹی ریاستوں میں تقسیم کیا جائے ، اکھلیش یادو نے کہاکہ جو لوگ تقسیم کی بات کررہے ہیں وہ دراصل ملک کو بھی تقسیم کرسکتے ہیں۔ کیونکہ ملک بھی بہت بڑا ہے ۔ تم فی الحال ریاست کی تقسیم کا اصرار کررہی ہو لیکن ملک بھی تو بہت بڑا ہے ۔ اور ذاتی مفادات کیلئے اُسے بھی تقسیم کیا جاسکتا ہے ۔ بی جے پی پر تنقید کرتے ہوئے اکھلیش یادو نے کہا کہ یہ پارٹی جھوٹ بولنے میں مہارت رکھتی ہے ۔ میں نے مظفرنگر سے غازی آباد تک کا دورہ کیا ہر طرف بی جے پی کے جھوٹ کے چرچے ہیں ۔ انھوں نے بتایا کہ نیتی ایوگ کی تشکیل کے بعد اچھے دن کا خواب بھی بکھرگیا ہے کیونکہ اترپردیش کو 9000 کروڑ سے محروم کردیا گیا ۔

TOPPOPULARRECENT