Tuesday , October 24 2017
Home / ہندوستان / بی جے پی کے وزیر پر مرہٹوں کی توہین کا الزام

بی جے پی کے وزیر پر مرہٹوں کی توہین کا الزام

پیسہ لے کر ریالیوں میں شرکت کے ریمارک پر شیوسینا کا ردعمل
ممبئی ۔ 18 اکتوبر (سیاست ڈاٹ کام) مہاراشٹرا کے ایک وزیر راجکمار بڈولے کے اس ریمارک پر مراہٹا مورچوں کی کامیابی کے پس پردہ دولت کی طاقت کارفرما ہے، بی جے پی کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے شیوسینا نے کہا کہ حکمراں جماعت کو یہ وضاحت کرنی چاہئے کہ پارٹی کے مرکزی قائدین بھی دولت کے بل بوتے پر اس طرح کے جلسے اور جلوس منعقد کرتے ہیں؟ وزیر سماجی انصاف بڈولے نے حال ہی میں اورنگ آباد کے ایک پروگرام میں کہا تھا کہ آج کل احتجاجی مظاہروں اور ریزرویشن کے مطالبات پر کوئی بھی کیوں آئے گا؟ ممکن ہے کہ لوگوں کو پیسہ دے کر اکٹھا کیا جارہا ہو۔ شیوسینا کے ترجمان ’’سامنا‘‘ کے اداریہ میں کہا گیا ہے گوکہ وزیر موصوف نے یہ وضاحت کی ہے کہ ان کا ریمارک مرہٹوں کے بارے میں نہیں تھا بلکہ عام نوعیت کی ریالیوں سے متعلق تھا۔ اگر یہ حقیقت ہے تو صدر بی جے پی امیت شاہ کے جلسوں کے بارے میں کیا خیال ہے جبکہ اُترپردیش اسمبلی انتخابات کے پیش نظر ریالیوں میں عوام کا ہجوم اکٹھا کیا جارہا ہے۔ حتی کہ وزیراعظم نریندر مودی کے جلسوں میں بھی عوام کی کثیر تعداد شریک ہوئی ہے۔ کیا بی جے پی قائدین، عوام کو پیسہ دے کر لارہے ہیں؟ حکمران جماعت کی حلیف جماعت نے کہا کہ راجکمار بڈولے نے یہ الزام عائد کرکے مرہٹا برادری کی توہین کی ہے کہ خاموش مظاہروں میں شرکت کیلئے انہیں رقم ادا کی جارہی ہے۔ شیوسینا نے وزیر موصوف کو مشورہ دیا کہ ایسے الفاظ کا استعمال نہ کریں جس سے سماجی ہم آہنگی متاثر ہوسکتی ہے اور ایک برادری دوسری برادری سے متصادم ہوسکتی ہے۔

TOPPOPULARRECENT