Friday , August 18 2017
Home / کھیل کی خبریں / بی سی سی آئی میں اصلاحات کو سپریم کورٹ کی منظوری

بی سی سی آئی میں اصلاحات کو سپریم کورٹ کی منظوری

نئی دہلی۔18 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) سپریم کورٹ نے آج بی سی سی آئی میں اصلاحات کے لئے لودھا کمیٹی کی جانب سے پیش کی جانے والی سفارشات کو منظوری دی ہے اور کہا ہے کہ 70 سال سے زائد والے افراد اور بیوروکریٹس کو اس کا رکن بننے نہیں دیاجانا چاہئے لیکن بی سی سی آئی کی کارگزاری اور بیٹنگ کو قانونی درجہ دینے کا فیصلہ پارلیمنٹ پر چھوڑ دیا ہے۔ ہندوستان کے سبکدوش چیف جسٹس آر ایم لودھا کی صدارت میں کمیٹی نے سپریم کورٹ کو ایک سفارشی رپورٹ پیش کی تھی جس میں بی سی سی آئی میں اصلاحات کی بات کی گئی تھی۔ چیف جسٹس ٹی ایس ٹھاکر اور جسٹس ایف ایم آئی خلیف اللہ پر مشتمل بنچ نے بی سی سی آئی کی جانب سے کمیٹی کی سفارش ایک ریاست ایک ووٹ کے خلاف اعتراض کو مسترد کردیا ہے اور کہا ہے کہ مہاراشٹرا اور گجرات جیسی ریاستوں میں ایک سے زائد کرکٹ اسوسی ایشنس موجود ہیں اور انہیں روٹیشن پالیسی کے تحت حق رائے دہی حاصل ہونی چاہئے۔ مذکورہ بنچ نے لودھا کمیٹی کی جانب سے تجویز کردہ اس بات کو بھی قبول کرلیا ہے کہ بی سی سی آئی میں ایک شخص ایک عہدے پر ہی فائز رہے گا تاکہ کسی بھی قسم کے مفادات حاصلہ کو روکا جاسکے۔ دریں اثناء سپریم کورٹ نے پارلیمنٹ پر یہ چھوڑ دیا ہے کہ وہ بی سی سی آئی کی سرگرمیوں کو حق معلومات کے تحت لائے اور ساتھ ہی ملک میں کرکٹ کی سٹہ بازی کو قانونی درجہ دیا جائے یا اس پر پابندی برقرار رکھی جائے، اس کا فیصلہ بھی پارلیمنٹ کو حاصل رہے گا۔ علاوہ ازیں عدالت نے بورڈ کو یہ اختیار دیا ہے کہ وہ نشریات کے حقوق اور فرانچائز کے اراکین کے تعلق سے موجودہ معاہدات میں ضرورت کے مطابق تبدیلی جائے یا اسے من و عن رکھا جائے۔ عدالت نے بی سی سی آئی کو ہدایت بھی دی ہے کہ وہ انتظامیہ کے ڈھانچے اور اس کی کارکردگی میں شفافیت کو یقینی بنائے اور آئندہ چھ ماہ کے اندر تفصیلات فراہم کرے۔ سپریم کورٹ نے 4 جنوری کو لودھا کمیٹی قائم کی تھی تاکہ وہ بی سی سی آئی میں اصلاحات کے لئے سفارشات اور تفصیلی رپورٹ پیش کرے ۔ دریں اثناء بی سی سی آئی کے سینئر عہدیدار اور آئی پی ایل کے چیرمین راجیو شکلا نے کہا ہے کہ سپریم کورٹ کی جانب سے دیئے جانے والے فیصلے کو بورڈ احترام کی نگاہ سے دیکھتا ہے۔ شکلا نے ٹی وی چینلس سے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم سپریم کورٹ کے فیصلے کا احترام کرتے ہیں ۔ جبکہ ٹیم کے سابق اور سینئر کھلاڑی بشن سنگھ بیدی اور کیرتی آزاد نے بھی سپریم کورٹ کے فیصلے کو بہتر فیصلہ قرار دیا ہے۔
شرد پوار اور سرینواسن کا کیریئر ختم
نئی دہلی۔18 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) سپریم کورٹ نے لودھا کمیٹی کی سفارشات قبول کرتے ہوئے آج فیصلہ سنایا ہے کہ بی سی سی آئی کے کسی عہدے پر ایسے شخص کا تقرر نہیں ہونا چاہئے جس کی عمر 70 سال سے تجاوز کرجائے۔ عدالت کے اس فیصلے کے بعد شردپوار، این سرینیواسن اور نرنجن شاہ ایسے نام ہیں جنہیں اب چھٹی لینی پڑے گی۔ بی سی سی آئی کے سابق صدر شردپوار 75 سال کے، تاملناڈو سے تعلق رکھنے والے طاقتور شخصیت سرینواسن 71 سال کے ہیں اور دونوں ہی اپنی ریاستوں کی اسوسی ایشن کے صدور ہیں جبکہ سوراشٹرا کرکٹ اسوسی ایشن کے صدر کی عمر بھی 72 برس ہے لہٰذا اب انہیں اپنے عہدوں سے علیحدہ ہونا پڑے گا۔ سپریم کورٹ نے کہا ہے کہ سفارشات پر اندرون چھ ماہ عمل آوری کی جانی چاہئے۔

TOPPOPULARRECENT