Saturday , August 19 2017
Home / شہر کی خبریں / بی سی طبقات کیلئے 119 اقامتی اسکولس

بی سی طبقات کیلئے 119 اقامتی اسکولس

آئندہ تعلیمی سال سے کارکردگی کا آغاز ، حکومت تلنگانہ کا فیصلہ
حیدرآباد۔/13اکٹوبر، ( سیاست نیوز) تلنگانہ حکومت نے ایس سی، ایس ٹی اور اقلیتوں کے بعد بی سی طبقات کیلئے 119 اقامتی اسکولس کے قیام کا فیصلہ کیا ہے۔ یہ اقامتی اسکولس آئندہ تعلیمی سال سے کارکرد ہوجائیں گے۔ پسماندہ طبقات میں تعلیمی پسماندگی دور کرنے کیلئے یہ فیصلہ کیا گیا ہے۔ پسماندہ طبقات کے اقامتی اسکولس سے متعلق سوسائٹی ہر ضلع میں اسکولوں کے قیام کا فیصلہ کرے گی۔ اسی دوران حکومت نے اوورسیز اسکالر شپ اسکیم کے دائرہ کار میں پسماندہ طبقات کو شامل کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ابھی تک اس اسکیم کے تحت ایس سی، ایس ٹی اور اقلیتی طلبہ کو بیرونی ممالک میں اعلیٰ تعلیم حاصل کرنے پر 20 لاکھ روپئے کی تعلیمی امداد کی گنجائش رکھی گئی تھی۔ حکومت نے بی سی طلبہ کیلئے بھی اس اسکیم کے آغاز کا فیصلہ کیا ہے جس پر آئندہ تعلیمی سال سے عمل آوری ہوگی۔ بتایا جاتا ہے کہ اسکیم سے استفادہ کیلئے شہری علاقوں میں 2 لاکھ روپئے سالانہ اور دیہی علاقوں میں دیڑھ لاکھ روپئے سالانہ آمدنی کی شرط مقرر کی گئی ہے۔ ہر خاندان میں صرف ایک طالب علم اسکیم سے استفادہ کا اہل ہوگا۔ اسکیم کے تحت جن ممالک کو اعلیٰ تعلیم کے حصول کیلئے شامل کیا گیا ہے ان میں امریکہ، برطانیہ، آسٹریلیا، کنیڈا اور سنگاپور شامل ہیں۔ اسپیشل چیف سکریٹری کی صدارت میں سلیکشن کمیٹی امیدواروں کا انتخاب کرے گی۔ فیس دو اقساط میں ادا کی جائے گی۔ محکمہ بی سی ویلفیر نے اسکیم سے استفادہ کیلئے رہنمایانہ خطوط جاری کئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT