Tuesday , September 26 2017
Home / Top Stories / بی سی کمیشن سے جوق در جوق نمائندگیاں ، مخلصانہ کوششوں کے ثمر آور نتائج

بی سی کمیشن سے جوق در جوق نمائندگیاں ، مخلصانہ کوششوں کے ثمر آور نتائج

میں اکیلا ہی چلا تھاجانب منزل مگر …

بی سی کمیشن سے جوق در جوق نمائندگیاں ، مخلصانہ کوششوں کے ثمر آور نتائج
ف12 فیصد تحفظات کے روح رواں جناب عامر علی خاں سے اضلاع کے مختلف وفود کی ملاقات ، موثر رہنمائی اور شعوربیداری کیلئے اظہار تشکر

حیدرآباد ۔ /18 ڈسمبر (سیاست نیوز) بی سی کمیشن کی سماعت میں دو دن کی توسیع سے استفادہ کرتے ہوئے آج بھی اضلاع کے مختلف وفود نے بی سی کمیشن سے نمائندگیاں کیں ، اس طرح پستی سے ترقی کی طرف جانے اور بچوں کے سنہرے مستقبل کیلئے اب ہر کوئی فکر مند ہے ، یہی وجہ ہے کہ 12 فیصد تحفظات کے حصول کیلئے اضلاع سے جوق درجوق تعداد بی سی کمیشن سے رجوع ہورہی ہے ، جبکہ موثر رہنمائی اور شعور بیداری کیلئے 12 فیصد تحفظات کی تحریک کے روح رواں جناب عامر علی خاں نیوز ایڈیٹر روزنامہ سیاست سے مختلف وفود نے ملاقات کرتے ہوئے ان سے اظہار تشکر کیا ۔ اضلاع کے علاوہ دونوں شہروں حیدرآباد و سکندرآباد سے تعلق رکھنے والی تنظیموں اور انفرادی طور پر عوام کی کثیر تعداد نے بی سی کمیشن سے نمائندگیاں کی ہیں۔ مسلمانوں کو 12% تحفظات کے حق میں جناب عامر علی خاں نے جو تحریک چلائی تھی ، اس کے ثمرآور نتائج برآمد ہورہے ہیں۔ اضلاع سے آنے والے شہریوں نے کہا کہ جناب عامر علی خاں ابتداء میں اکیلے ہی اس تحریک کا آغاز کیا تھا ، اس موقع پر یہ مصرعہ صادق آتا ہے کہ
میں اکیلا ہی چلا تھا جانب ِ منزل مگر …
محبوب نگر سے  جناب محمد تقی الدین احمد ریاستی سکریٹری ٹی آل میوا کے  پریس نوٹ کے بموجب ریاستی آل میوا کے وفد نے مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات کی فراہمی کا پر زور مطالبہ کرتے ہوئے ایک تفصیلی رپورٹ بی سی کمیشن حیدرآباد کے اجلاس میں حوالے کی ۔ وفد کی قیادت جناب قمر الدین چیرمین ‘ صادق اللہ مشیر ‘ فاروق حسین جنرل سکریٹری ‘ خواجہ غلام غازی الدین صدر ریاستی  ٹی آل میوا نے کی ۔ فاروق حسین جنرل سکریٹری نے بی سی کمیشن کو واقف کروایا کہ مسلمانوں کی معاشی ‘ تعلیمی اور سماجی حالت بد سے بدتر ہوچکی ہے ؑگذشتہ دہائیوں میں جتنے بھی کمیشنوں کا تقرر کیاگیا ہے ان تمام مسلمانوں کو پسماندگی کو واضح کر دیا ہے ۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ ریاست میں مسلمانوں کو آبادی 15 فیصد ہے ۔ لہذا  آبادی کے تناسب سے 15 فیصد تحفظات فراہم کئے جائیں ۔ خواجہ غلام غازی الدین صدر نے اپنے خطاب میں کہا کہ مسلمانوں کی حالت زار مخفی نہیں ہے  سارے کمیشنوں نے واضح انداز میں حقیقی تصویر پیش کی ہے ۔ سدھیر کمیشن نے بھی ظاہر کر دیا ہے کہ مسلمانوں کی حالت ایس سی و ایس ٹی طبقات سے بھی بدتر ہے ۔ لہذا مسلمانوں کو آبادی کے تناسب سے تحفظات فراہم کئے جائیں ۔ قمرالدین چیرمین ‘ صادق اللہ میئر المیوا نے وزیر اعلی چندرشیکھر راؤ نے قوی توقع ہے کہ وہ مسلمانوں سے کئے گئے اپنے وعدے کو پورا کریں گے۔ اسمبلی و پارلیمنٹ میں اس کے لئے جدوجہد کریں گے ۔ محمد موسی معاون صدر ‘ محمد تقی الدین احمد ریاستی سکریٹری نے بھی مخاطب کیا ۔ اس موقع پر محمد ایوب ‘ عشرت علی‘ محمد رحمن ‘ ڈاکٹر شفیق احمد ‘ محمد طاہر و دیگر ٹی آل میوا قائدین موجود تھے۔ آرمور  سے  رکن اسمبلی آرمور نے بی سی کمیشن پہنچ کر انہیں یادداشت حوالے کی اور انہیں بتایا کہ مسلم مائناریٹی معاشی اور تعلیمی اعتبار سے بہت پیچھے ہیں جو مختلف کمیشن کے ذریعہ معلوم کیا جاچکا ہے اور چیف منسٹر کے سی آر کی جانب سے ڈالی گئی سد ھیر کمیشن کی رپورٹ بھی موجود ہے ۔ انہوں نے کمیشن کو بتایا کہ مائناریٹی کو 12 فیصد تحفظات دیئے جائیں تاکہ ان کا تعلیمی اور معاشی معیار بہتر ہوسکے ۔ رکن اسمبلی آرمور جیون ریڈی نے کمیشن کو تحریری یادداشت پیش کی اس موقع پر رکن اسمبلی بودھن نے چیرمین اقلیتی بہبود جناب شکیل عامر بھی موجود تھے ۔ بچکندہ سے جناب اسعد علی منڈل صدر ٹی آر ایس کی قیادت میں حیدرآباد پہنچ کر بی سی کمیشن آفس پر جا کر ایک ہزار فارمس داخل کرتے ہوئے بی سی کمیشن سے نمائندگی کیگ گئی اور 12 فیصد تحفظات کی فراہمی کو یقینی بنانے کے لئے کمیشن کو مثبت انداز میں سفارش کرنے کی اپیل کی ہے ۔ بچکنڈہ کے وفد نے اخبار سیاست کے نیوز ایڈیٹر جناب عامر علی خان جو 12 فیصد تحفظات کی تحریک کے روح رواں ہیں انہیں مبارکباد پیش کرتے ہوئے ان سے نیک تمنائوں کا اظہار کیا ۔

TOPPOPULARRECENT