Saturday , August 19 2017
Home / کھیل کی خبریں / بی پی ایل میں پاکستانی کھلاڑیوں کی تلخ یادیں!

بی پی ایل میں پاکستانی کھلاڑیوں کی تلخ یادیں!

لاہور ، 16 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) بنگلہ دیش پریمیر لیگ(بی پی ایل) میں حصہ لینے والے پاکستان ٹسٹ ٹیم کے کپتان مصباح الحق سمیت اکثر کھلاڑی تلخ یادوں کے ساتھ وطن واپس پہنچ گئے۔کرکٹ ویب سائیٹ ’کرک بز‘ کی رپورٹ کے مطابق بہت سے پاکستانی کھلاڑی جنھوں نے بی پی ایل میں حصہ لیا، تلخ یادوں کے ساتھ وطن واپس لوٹے ہیں جس کی بڑی وجہ ٹیم مالکان اور انتظامیہ کی جانب سے انہیں میدان سے باہر بٹھانا ہے۔ پاکستانی ٹسٹ کیپٹن مصباح بھی ان کھلاڑیوں میں شامل تھے جنھیں رنگپور رائیڈرز کے انتظامیہ کی جانب سے آخری 7 میچوں میں مسلسل باہر بٹھایا گیا اور دیگر غیرملکی کھلاڑیوں بشمول غیر معروف افغانستان کے محمد نبی کو ترجیح دی گئی۔ مصباح الحق نے کہا: ’’میں اس معاملے پر کچھ نہیں کہہ سکتا، میرے خیال میں ٹیم کے مالک اور کوچ جانتے ہوں گے کہ ضرورت کیا ہے لیکن یہ آسان نہیں ہے کہ لمبے وقت تک ٹیم سے باہر بیٹھا جائے‘‘۔ مصباح الحق بریسال بلز کے خلاف ناک آؤٹ میچ سے باہر کئے جانے پر واضح طورپر ناخوش نظر آئے اور ان کی عدم شمولیت سے کئی حلقوں کو بھی حیرت ہوئی۔ کامران اکمل، سعیداجمل، عمر اکمل اور وہاب ریاض بھی بی پی ایل حکام کے سلوک سے نالاں نظر آئے ہیں۔

کامران نے کہا کہ ’’میں نے پہلے ہی ٹیم کے مالک اور انتظامیہ کو واضح کردیا تھا کہ میں بی پی ایل میں اوپننگ کرنا چاہتا ہوں لیکن ابتدائی دومیچوں کے بعد مجھے خاطر خواہ جواب نہیں ملا‘‘۔ انھوں نے کہا کہ’’ میں وہاں صرف پیسے کمانے نہیں گیا تھا، میراخیال تھا کہ میں اپنی اچھی کارکردگی سے سلیکٹرز کی توجہ حاصل کروں گا‘‘۔ پاکستانی ٹیم کے فاسٹ بولر وہاب ریاض نے بی پی ایل کے دوران ہی یہ فیصلہ کرلیا کہ ڈھاکا میں بیٹھ کر وقت ضائع کرنے سے بہتر ہے گھر واپس چلاجاؤں۔ رنگپور رائیڈرز کی نمائندگی کرنے والے وہاب نے کہا کہ ’’یہ اتنا آسان نہیں تھا کہ اکثر میچوں میں نظرانداز کیاجائے، یہ مصباح کیلئے بھی مشکل تھا لیکن انھوں نے اچھی طرح سنبھالا۔ مصباح نے رنگپور رائیڈرز کیلئے پہلے میچ میں 39 گیندوں پر 61 رنز کی اننگز کھیلی جس کے باعث ان کی ٹیم کو کامیابی ملی تھی۔ مصباح نے بی پی ایل میں 5 میچ کھیلے اورمجموعی طورپر108رنز بنائے جبکہ وہاب کو صرف ایک میچ میں جگہ دی گئی جس میں انھوں نے ایک وکٹ حاصل کی تھی۔کامران اکمل کو چٹگانگ وائکنگز کی جانب سے صرف دومیچ کھیلنے کا موقع ملا جس میں ناقص کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے وہ محض 12 رنز بنائے، عمر اکمل نے 5 میچوں میں حصہ لے کر 89 رنز بنائے جبکہ سعید اجمل کو 3 میچ کھیلنے کا موقع ملا جن میں وہ 2 وکٹیں حاصل کرپائے۔

TOPPOPULARRECENT