Thursday , March 30 2017
Home / شہر کی خبریں / بے روزگاروں کو روزگار اور ملازمتیں فراہم کرنے کے مطالبہ پر قائم

بے روزگاروں کو روزگار اور ملازمتیں فراہم کرنے کے مطالبہ پر قائم

ٹی آر ایس حکومت کا رویہ الٹا چور کوتوال کو ڈانٹے کے مترادف : پروفیسر کودنڈا رام
حیدرآباد ۔ 16 ۔ فروری : ( سیاست نیوز) : صدر نشین تلنگانہ پولٹیکل جوائنٹ ایکشن کمیٹی پروفیسر ایم کودنڈا رام نے تلنگانہ حکومت کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ حقیقت تو یہ ہے کہ وہ حکومت کی کوئی مخالفت کیے بغیر صرف مخلوعہ جائیدادوں پر تقررات کرتے ہوئے بے روزگار تعلیم یافتہ نوجوانوں کو ملازمتیں فراہم کرنے کا ہی مطالبہ کررہے ہیں ۔ لیکن حکومت بالخصوص تلنگانہ راشٹرا سمیتی کے قائدین ’ الٹا چور کوتوال کو ڈانٹے ‘ کے مصداق ان پر طلباء کو اکسانے کا الزام عائد کررہے ہیں جو کہ بالکلیہ طور پر مضحکہ خیز ہے ۔ پروفیسر کودنڈا رام جنہوں نے آج نلگنڈہ مستقر پر طلباء و بے روزگار نوجوانوں کے ایک بڑے جلسہ سے خطاب کررہے تھے ۔ حکومت کے اختیار کردہ رویہ پر اپنی شدید برہمی کا اظہار کرتے ہوئے دریافت کیا کہ آیا ایک لاکھ جائیدادیں مخلوعہ پائی جانے پر صرف چار ہزار جائیدادوں پر تقررات کرنا کوئی منصفانہ بات یا اقدام ہے ؟ انہوں نے کہا کہ حکومت اگر اپنے وعدے کو پورا کرتی تو آج ہم کو حکومت سے مطالبہ کرنے کی ہرگز ضرورت ہی نہیں ہوتی کیوں کہ گذشتہ انتخابات کے موقعہ پر مسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے ہمیشہ یہ کہا کہ ٹی آر ایس کے برسر اقتدار آنے کے ساتھ ہی ایک لاکھ تعلیم یافتہ بے روزگار نوجوانوں کو فوری ملازمتیں فراہم کی جائیں گی ۔ لیکن جیسے ہی ٹی آر ایس کو اقتدار حاصل ہوا ۔ اپنے عوام سے کیے ہوئے تمام وعدوں کو فراموش کردیا ۔ پروفیسر کودنڈا رام نے کہا کہ وہ صرف مسٹر کے چندر شیکھر راؤ کے دئیے گئے تیقنات و وعدوں کو یاد دلاتے ہوئے ملازمتوں کی فراہمی سے متعلق کوئی واضح طور پر کیلنڈر کا اعلان کرنے عملی اقدامات کرنے کا پر زور مطالبہ کیا ۔ انہوں نے خانگی شعبہ کی کمپنیوں ( پرائیوٹ کمپنیوں ) میں ملازمتوں کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ آج تمام خانگی شعبہ کے ادارہ جات ( پرائیوٹ کمپنیوں ) کی جانب سے مقامی بے روزگار افراد کے ساتھ ساتھ تحفظات کو بھی نظر انداز کیے جارہے ہیں ۔ لہذا مقامی بے روزگار افراد کو ملازمتوں میں تحفظات فراہم کرنے کے لیے پرائیوٹ کمپنیوں کو پابند بنانے کا حکومت سے مطالبہ کیا ۔ صدر نشین تلنگانہ پولٹیکل جوائنٹ ایکشن کمیٹی پروفیسر کودنڈا رام نے کہا کہ اگر حکومت ایک لاکھ ملازمتیں فراہم کرنے کا اعلامیہ جاری کرتی ہے تو وہ اپنی مجوزہ 22 فروری کو منظم کی جانے والی ریالی سے دستبرداری اختیار کریں گے ۔ بصورت دیگر بڑے پیمانے پر بہر صورت ریالی منظم کی جائے گی اور خواہ کتنی ہی رکاوٹیں کھڑی کی جائیں تو بھی مجوزہ ریالی کو بہر صورت کامیاب بنانے کی نلگنڈہ کے عوام بالخصوص طلباء تعلیم یافتہ بے روزگار نوجوانوں سے پر زور اپیل کی ۔۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT