Wednesday , August 16 2017
Home / جرائم و حادثات / تائی نے 6 ماہ کی شیر خوار کو گڑھے میںپھینک دیا

تائی نے 6 ماہ کی شیر خوار کو گڑھے میںپھینک دیا

تالاب کٹہ میں انسانیت سوز واقعہ ، بچی کی موت کے ذریعہ دیورانی سے انتقام
حیدرآباد۔ یکم اکتوبر (سیاست نیوز) بچوں کو دیکھ کر دشمن بھی دشمنی بھول جاتے ہیں، عداوت، غم و غصہ شیر خوار بچوں کے کھیل میں کہیں گم ہوجاتا ہے لیکن سماج میں ایسے شیطان صفت انسان بھی ہیں جو اپنی دشمنی میں جانوروں سے بدتر رویہ اختیار کرنے لگتے ہیں۔ پرانے شہر کے علاقہ تالاب کٹہ میں آج ایک ایسا ہی انسانیت سوز شرمناک واقعہ پیش آیا جہاں رشتہ میں حقیقی تائی نے اپنے دیور کی 6 ماہ کی بچی کو پانی کے گڑھے میں پھینک دیا جہاں اس کی موت واقع ہوگئی۔ لڑکی کو پانی سے نکال کر ہاسپٹل منتقل کیا گیا لیکن ڈاکٹروں نے اسے مردہ قرار دیا۔ اندرون ہفتہ پرانے شہر میں کمسن لڑکیوں کی اپنوں کے ہاتھوں ہلاکت کا یہ دوسرا واقعہ ہے۔ کاماٹی پورہ میں زینب فاطمہ کی اپنے والد کے ہاتھوں مبینہ ہلاکت کا واقعہ ابھی تازہ ہی تھا کہ تالاب کٹہ میں آج 6 ماہ کی خدیجۃ الکبریٰ کی ہلاکت کا واقعہ پیش آیا۔ تفصیلات کے مطابق پیشہ سے باورچی محمد اسمعیل اپنے بھائیوں کے ہمراہ تالاب کٹہ اسٹریٹ نمبر 4 میں رہتا ہے۔ چار بھائیوں کا یہ مشترکہ خاندان ہے۔ پولیس نے یہ بات بتائی۔ خدیجہ، اسمعیل کی لڑکی تھی۔ اسمعیل کی شادی دیڑھ سال قبل حلیمہ بیگم سے ہوئی تھی۔ آج حلیمہ بچی کو گھر میں چھوڑ کر پڑوس میں موجود اپنے رشتہ داروں کے پاس گئی تھی اور بچی پر نظر رکھنے کیلئے اپنے جیٹھ کی لڑکیوں سے کہا تھا جو مکان میں تعلیم میں مصروف تھیں۔ اس دوران خدیجہ رونے لگی جو ایک ساڑی کے جھولے میں موجود تھی۔ اس دوران خدیجہ کی تایازاد بہن پڑھائی چھوڑ کر اپنی چاچی کو بلانے گئی تاہم دونوں واپس آئے تو خدیجہ کمرے میں نہیں تھی۔ اس شیر خوار کو مکان میں ہر جگہ تلاش کیا گیا۔ خدیجہ کی ماں نے مکان میں تلاش کرنے کے بعد روتی ہوئی پڑوس کے مکانات میں دریافت کیا اور جواب نفی میں ملنے پر حیران تھی کہ مکان میں پانی کے گڑھے پر نظر پڑی جہاں بچی موجود تھی۔ فوراً دواخانہ منتقل کرنے کے بعد اس شیرخوار بچی کو مردہ قرار دیا گیا۔ اس شیرخوار کی موت کے بعد خاندان کا آپسی مسئلہ اور حادثاتی موت تصور کرتے ہوئے اسمعیل کے افراد خاندان نے پہلے تو خاموشی اختیار کی لیکن جب پولیس نے معاملہ میں مداخلت کی تو چند ہی گھنٹوں میں یہ حقیقت سامنے آگئی کہ تائی عرشیہ بیگم اس موت کی ذمہ دار ہے۔ پولیس بھوانی نگر نے عرشیہ بیگم کو حراست میں لے لیا ہے۔ واقعہ کی اطلاع پاکر ڈپٹی کمشنر پولیس ساؤتھ زون مسٹر ستیہ نارائنا تالاب کٹہ علاقہ میں اسمعیل کے مکان پہونچے۔ واقعہ پر اپنے گہرے رنج و غم کا اظہار کیا۔ انہوں نے خدیجہ کی موت پر افسوس ظاہر کیا اور بتایا کہ اس لڑکی کو اس کی تائی عرشیہ نے قتل کیا ہے۔ انہوں نے قتل کی وجوہات بتاتے ہوئے کہا کہ عرشیہ اور حلیمہ بیگم میں گھریلو کام کاج پر بحث و تکرار، جھگڑے اور تنازعات آئے دن چلتے رہتے تھے۔ عرشیہ نے اپنی دیورانی سے بدلہ لینے کیلئے اس کی شیرخوار بچی کا قتل کردیا۔ ڈی سی پی نے بتایا کہ عرشیہ کا جرم ثابت ہوچکا ہے اور پولیس اس کے خلاف سخت کارروائی کرے گی۔ تالاب کٹہ پولیس نے مقدمہ درج کرلیا ہے اور مصروف تحقیقات ہے۔

TOPPOPULARRECENT