Friday , July 21 2017
Home / جرائم و حادثات / تاجرین کا اغوا کرنے والی ٹولی ہریانہ میں گرفتار

تاجرین کا اغوا کرنے والی ٹولی ہریانہ میں گرفتار

حیدرآباد۔/14جون، ( سیاست نیوز) سنٹرل کرائم اسٹیشن ( سی سی ایس ) پولیس نے تاوان کیلئے تاجرین کا اغوا کرنے والی ایک بین ریاستی ٹولی کو ہریانہ سے گرفتار کرلیا۔ ڈپٹی کمشنر پولیس ڈیٹکٹیو ڈپارٹمنٹ مسٹر اویناش موہنتی نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے بتایا کہ بیگم بازار کے ایک تاجر پردھومن لوہیا جو گجانند تمرا انڈسٹریز پرائیویٹ لمیٹیڈ چرلہ پلی کا مالک ہے اپنے ساتھی بھرت لیلا کے ہمراہ تانبہ کے وائر کا کاروبار کرتا تھا۔ تاجرین کی نشاندہی کے بعد ٹٹلوباجی گینگ کے رکن 26سالہ شکیل متوطن ضلع پلوال ہریانہ اور اس کا ساتھی 35 سالہ اکبر انہیں راجستھان کے ضلع بھرت پور میں 320 روپئے فی کلو تانبہ کا اسکراپ فراہم کرنے کا دعویٰ کیا جس کے نتیجہ میں لوہیا اور اس کا ساتھی لیلا دونوں بذریعہ فلائیٹ 19مئی کو دہلی روانہ ہوئے جہاں پر شکیل نے ان سے ملاقات کی اور انہیں گرگاؤں کے قریب علاقہ سونا منتقل کیا۔ منصوبہ کے تحت شکیل اور اکبر نے اپنے دیگر ساتھیوں ساجد اور مجسر کی مدد سے مذکورہ تاجرین کو طفنچوں سے دھمکایا اور ان کے قبضہ سے قیمتی گھڑیاں، لیپ ٹاپ، موبائیل فون، طلائی چین وغیرہ چھین لیا اور انہیں خوفزدہ کرنے کیلئے ہوا میں فائرنگ بھی کی۔ دونوں تاجرین کو لٹیروں کی ٹولی نے اغوا کرلیا اور ان کے رشتہ داروں سے ربط کرتے ہوئے ایک کروڑ 20لاکھ روپئے بطور تاوان دینے کا مطالبہ کیا۔ جس کے نتیجہ میں تاجرین کے افراد خاندان نے 50 لاکھ روپئے آن لائن لٹیروں کے اکاؤنٹ میں منتقل کئے۔ اتنا ہی نہیں دونوں تاجرین کے رشتہ داروں سے مزید تاوان کا مطالبہ کیا گیا جس کے دوران لوہیا اور لیلا وہاں سے فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے اور بذریعہ بس حیدرآباد پہنچ کر کمشنر پولیس سے ملاقات کرکے ایک شکایت درج کرائی۔ سنٹرل کرائم اسٹیشن نے اس سلسلہ میں مقدمہ درج کرکے تحقیقات کا آغاز کردیا اور فی الفور کارروائی میں لٹیروں کے بینک کھاتوں کو منجمد کردیا جس کے ذریعہ 37 لاکھ روپئے کی رقم بچالی گئی۔ سی سی ایس کی اسپیشل ٹیم نے ہریانہ کی کرائم انوسٹی گیشن اتھارٹی کی مدد سے دو لٹیروں کو گرفتار کرنے میں کامیابی حاصل کرلی اور انہیں حیدرآباد منتقل کرکے جیل بھیج دیا گیا۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT