Thursday , August 17 2017
Home / دنیا / تاجکستان میںتشدد ، 17 افراد ہلاک

تاجکستان میںتشدد ، 17 افراد ہلاک

دوشنبے۔ 5 سپٹمبر۔(سیاست ڈاٹ کام) تاجکستان کے دارلحکومت دوشنبے اور اس کے گردونوح میں پرتشدد واقعات میں 17 افراد ہلاک ہوگئے ۔ وزارت داخلہ کا کہنا ہے کہ دوشنبے کے باہر وحدت کے قصبے میں اور دوشنبے میں مرکزی وزارت داخلہ کی عمارت پر حملوں میں آٹھ پولیس اہلکار ہلاک ہوگئے ہیں۔ حکام نے ان حملوں کا الزام برطرف ہونے والے نائب وزیردفاع جنرل عدلحلیم نذرزودہ پر عائد کرتے ہوئے کہا ہے وہ ایک ’دہشت گرد گروہ‘ کی قیادت کر رہے تھے۔ دوشنبے میں قائم امریکی سفارت خانہ بھی بند کر دیا گیا ہے اور انھوں نے تنبیہ کیا ہے کہ جھڑپیں دیگر طرز کے پرتشدد واقعات کا پیشہ خیمہ بھی ثابت ہوسکتی ہیں۔ سرکاری خبررساں ادارے کی جانب سے وزارت داخلہ کے بیان میں کہا گیا ہے جمعے کی صبح ایک ’منظم مجرمانہ گروپ‘ نے وحدت کے داخلی امور کے شعبے کی عمارت اور دوشنبے میں مرکزی حکومت کی عمارت پر حملے کیے ہیں۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ جس کے نتیجے میں، ایک بڑی تعداد میں ہتھیار اور اسلحہ دہشت گرد گروہ اپنے ساتھ لے گیا ہے۔ بیان میں بتایا گیا ہے کہ ’دہشت گردوں کا ایک گروہ‘ جنرل نذرزودہ کی قیادت میں رومٹ جارج کے علاقے کی جانب فرار ہوا ہے اور حکام انھیں اور ان کے ساتھیوں کو تلاش کر رہے ہیں۔ خیال رہے کہ تاجکستان میں حالیہ تشدد کی لہر ملک میں عام زندگیوں میں مذہب اسلام کے کردار کے تنازع کے بعد ابھری ہے۔ واضح رہے کہ تاجکستان میں مسلمانوں کی اکثریت ہے تاہم اس کے آزادی سے اب تک سیکولر سیاسی نظام قائم ہے۔

TOPPOPULARRECENT