Wednesday , September 27 2017
Home / شہر کی خبریں / تاریخ کے مطالعہ سے نوجوان نسل میں مثبت رائے کا حوصلہ

تاریخ کے مطالعہ سے نوجوان نسل میں مثبت رائے کا حوصلہ

نوجوانوں کو مثبت سونچ سے آگے بڑھنے کا مشورہ ، ڈاکٹر ثمینہ بشیر کی کتاب کا رسم اجراء
جناب عامر علی خاں ، ڈاکٹر کے کیشو راؤ ، پروفیسر ایس اے شکور و دیگر کا خطاب
حیدرآباد۔7جولائی(سیاست نیوز) لکچرر ہسٹری ڈاکٹر ثمینہ بشیر کی کتاب تاریخ ہند( نصاب بی اے سال اول سمسٹر کی مناسبت سے ) کی رسم اجرائی اندرا پریہ درشنی کالج نامپلی کے آڈیٹوریم میںکے کیشورائو رکن پارلیمنٹ راجیہ سبھا وجنرل سکریٹری تلنگانہ راشٹریہ سمیتی کے ہاتھوں عمل میں آئی۔ جناب عامر علی خان نیوز ایڈیٹر سیاست ‘ ڈاکٹر ورا لکشمی پرنسپل اندرا پریہ درشنی کالج ‘پروفیسر ایس اے شکور سکریٹری اُردو اکیڈیمی‘ مولانا سید طار ق قادری‘پروفیسر شانتا وینی صدر شعبہ کیمسٹری نے مہمانِ اعزازی کے طور پر شرکت کی ۔مسٹر کے کیشورائو نے اپنے صدارتی خطاب میںتاریخ ہند کی مصنفہ محترمہ ثمینہ بشیر کومبارکباد پیش کی اور کہاکہ تاریخی کتابوں کو تحریر کرنا آسان کام نہیں ہے ۔ انہوں نے مزیدکہاکہ تاریخ ہند کے عنوان پر کتاب وقت کا اہم تقاضہ ہے۔ انہوں نے کہاکہ اس قسم کی کتابوں کے مطالعہ سے ماضی کے حالات کا اندازہ او رمستقبل کے لئے حکمت عملی تیار کی جاسکتی ہے۔ کیشو رائو نے کہاکہ مصنفہ نے اس کتاب کے ذریعہ تاریخی اہمیت کوطلبہ کے لئے متعارف کیاہے جو ایک بہترین اقدام ہے ۔ انہو ں نے اُردو کتابو ں کی اشاعت کے متعلق بھروسہ دلایا کہ وہ ہر ممکن تعاون کریں گے ۔ انہوں نے پریہ کالج انتظامیہ پر زوردیاکہ وہ اُردو کانفرنس کا انعقاد عمل میں لائیںجس کے انصرام کے لئے وہ اپنے بجٹ رقم جاری کریںگے۔انہوں نے کہاکہ ہمیںاس بات کا اعزاز حاصل ہے کہ ہم نے انجینئرنگ او رمیڈیکل میںاُردو میڈیم کو متعارف کیا ہے۔انہو ںنے مزیدکہاکہ 172اسکولس اور18انٹر میڈیٹ کالجس بھی ہیںجو ہمارے لئے قابل ذکر بات ہے۔جناب عامر علی خان نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مصنفہ کی ستائش کی او رکہاکہ تاریخی مواد کا مطالعہ نوجوان نسل کے لئے ضروری ہے ۔جناب عامر علی خان نے اس موقع پر ادارہ سیاست کی جانب سے تاریخی واقعات پر مشتمل کتاب کی اشاعت کا بھی ذکر کیا او رکہاکہ تاریخ کا مطالعہ نوجوان نسل میں مثبت رائے قائم کرنے کا حوصلہ پیدا کرتا ہے۔ انہوں نے کہاکہ آج ہماری نوجوان نسل تاریخی ہستیوں کو چھوڑ کر فلمی ستاروں اور مشہور شخصیتوں کی پرستار بنی ہوئی ہے۔ انہوں نے مزیدکہاکہ کوتاہ ذہنی کے بجائے نوجوانوں کو مثبت سونچ کے ساتھ آگے بڑھنا چاہئے تاکہ مستقبل کے منصوبوں میںانہیں ہر محاذ پر کامیابی مل سکے۔ انہوں نے کہاکہ پیشرو مقررین نے کمپیوٹر سائنس اور تکنیکی حالات میں تبدیلیوں کا ذکر کیامگر یہ بھی حقیقت ہے کہ تاریخ کے شعبہ میںکبھی تبدیلی نہیں آسکتی ۔ انہوں نے آڈیٹوریم میںموجودہ طالبات کی کثیرتعداد سے کہاکہ وہ سرکاری ملازمتوں کے حصول کے لئے خودکو تیار کریں۔ حکومت تلنگانہ بہت جلدمختلف شعبہ جات میںایک لاکھ32ہزاروں جائیدادوں پر تقررات کے ضمن میںاعلامیہ جاری کرنے والی ہے۔ جناب عامر علی خان نے مصنفہ ڈاکٹر ثمینہ بشیر کی ستائش میںکہاکہ ایک ایسے وقت تاریخ ہند کے عنوان پر کتاب شائع کی گئی ہے جب سارے ملک کو تاریخ ہند کی اہمیت اور افادیت کو سمجھنے کی ضرورت ہے۔پرنسپل اندرا پریہ درشنی کالج ڈاکٹر ورا لکشمی نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مصنفہ کی کاوشوںکو سراہا ۔ انہوں نے کہاکہ مصنف اسلامی تاریخ اور تاریخ میں دوہرے ایم اے کے علاوہ تاریخ کے مضمون پر پی ایچ ڈی بھی کی ہے۔پروفیسر ایس اے شکور نے بھی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مصنفہ کی ستائش کی اور کہاکہ کتاب کی اشاعت کے لئے تاریخ کے عنوان کا انتخاب کافی اہمیت کا حامل ہے۔انہوں نے کہاکہ سیول سرویس امتحانات میں حصہ لینے والے امیدواروں کے لئے 60فیصد سے زائد سوالات تاریخ سے جڑے ہوتے ہیں ۔ انہوں نے اس موقع پر حکومت تلنگانہ کی فلاحی اسکیمات کا بھی ذکر کیا۔

TOPPOPULARRECENT