Monday , August 21 2017
Home / اضلاع کی خبریں / تاڑوائی میں مِنی اسٹڈیم کی عدم تکمیل

تاڑوائی میں مِنی اسٹڈیم کی عدم تکمیل

یلاریڈی ۔14 ۔ اپریل ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) منڈل تاڑوائی مستقر پر 18 سال پہلے منی اسٹڈیم کا تعمیری کام کا آغاز کیا گیا تھا جو آج تک مکمل نہ ہوسکا ۔ ذمہ داران کی عدم دلچسپی و لاپرواہی کے سبب منڈل میں تیار کیا جانے والا منی اسٹڈیم خواب کی طرح ادھورا رہ گیا ۔ 1998 ء میں تب کے اسپورٹس وزیر مسٹر سریدھر ریڈی نے تاڑوائی کو منی اسٹڈیم منظور کیا تھا اور عوام کے چندہ جمع کر کے شیوار پر پانچ ایکڑ اراضی خرید کر حکومت کے حوالے کیا اور حکومت نے اسٹڈیم کی تعمیرات کیلئے 14 لاکھ روپئے منظور کئے جس میں پہلی بار دو لاکھ 50 ہزار روپئے جاری کئے گئے ۔ جس سے اسٹیڈیم کی اراضی کی حصار بندی عمل میں لائی گئی اور پھر پویلین کا کام آغاز کیا گیا جو آج تک مکمل نہ ہوسکا ۔ حلقہ یلاریڈی میں ایک ہی منی اسٹڈیم اور یہ بھی ذمہ داروں کی لاپرواہی کا شکار ہونے سے فنڈ منظور نہیں کئے جارہے ہیں ۔ تین سال قبل اسٹڈیم تعمیرات کیلئے ضروری فنڈ جاری کرنے اس کی رپورٹ تیار کر کے روانہ کرنے ضلع کلکٹر کے احکام دینے پر تحصیلدار ، MPDO نے اسٹڈیم کا معائنہ کیا اور دو کروڑ روپئے سے رپورٹ تیار کر کے بھیج دی ۔ جس پر آج تک منظوری نہ مل سکی ۔ منڈل تاڑوائی مستقر کے ساتھ ساتھ بسوانا پلی ، ارگنڈہ ، رینڈریل ، ایر ، پہاڑ ، نندی واڑہ ، کرڈ پلی ، برہمن پلی ، کرشنا جی ، وٹری ، دیمی کلاں ، مختلف مواضعات سے تعلق رکھنے والے طلباء کھیلوں میں بہترین مظاہرہ کررہے ہیں یہ طلباء کبڈی ، کھوکھو ، کرکٹ ، والی بال اور ہاکی میں ڈیویژن ، ضلع ، ریاستی و قومی سطح پر کھیل رہے ہیں لیکن بہتر سہولت نہ ہونے سے زیادہ تر کھلاڑی ابھر کر سامنے نہیں آرہے ہیں ۔ حکومت کو چاہئے کہ وہ جلد از جلد فنڈس جاری کرتے ہوئے نوجوان کھلاڑیوں کی راہ ہموار کرے ۔

TOPPOPULARRECENT