Friday , September 22 2017
Home / سیاسیات / تحفظات پر نظرثانی کا امکان مسترد :مودی

تحفظات پر نظرثانی کا امکان مسترد :مودی

مہاراشٹرا میں منعقدہ امبیڈکر کی تقریب میں شیوسیناغیرحاضر، بی جے پی کے ساتھ اختلافات شدید
ممبئی ۔ /11 اکٹوبر (سیاست نیوز) وزیراعظم نریندر مودی نے ریزرویشن پالیسی پر نظرثانی کیلئے آر ایس ایس سربراہ موہن بھاگوت کی خواہش سے خود کو لاتعلق کرتے ہوئے آج نظرثانی کا امکان یکسر مسترد کردیا ۔ انہوں نے این ڈی اے دور اقتدار میں تحفظات کو لاحق خطرات کے بارے میں افواہیں پھیلانے والوں کو ’’جھوٹوں کا گروپ‘‘ قرار دیا ۔ ریزرویشن جیسے متنازعہ مسئلہ پر اپنی خاموشی توڑتے ہوئے نریندر مودی نے آج ایسے وقت جبکہ بہار میں اسمبلی انتخابات کا پہلا مرحلہ شروع ہونے جارہا ہے ، بہار امبیڈکر کی وراثت کا سوال اٹھایا ۔ انہوں نے کہا کہ جھوٹی باتوں کا سلسلہ رکنا چاہئیے ۔ سماج کو دہشت زدہ کرنے کا سلسلہ ختم ہونا چاہئیے ۔ یہ صحیح سیاست نہیں ۔ نریندر مودی نے آج دستور ہند کے معمار امبیڈکر کی یادگار کیلئے سنگ بنیاد رکھا ۔ انہوں نے اس موقع پر کہا کہ جب بھی بی جے پی حکومت اقتدار پر آتی ہے جھوٹوں کا ایک گروپ یہ پروپگنڈہ شروع کردیتا ہے کہ تحفظات کو ختم کردیا جائے گا ۔

انہوں نے کہا کہ اٹل بہاری واجپائی حکومت کے دور میں بھی ایسا ہی کیا گیا تھا ۔ آر ایس ایس سربراہ موہن بھاگوت نے تحفظات پر نظرثانی کی بات کہی تھی جس پر شدید ردعمل سامنے آیا ۔ چیف منسٹر بہار نتیش کمار اور آر جے ڈی سربراہ لالو پرساد یادو نے فوری ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا تھا کہ پسماندہ اور کمزور طبقات کو تحفظات سے محروم کرنے کی ناپاک کوششیں کی جارہی ہیں ۔ قبل ازیں شیوسینا کے وزراء نے اس تقریب کا بائیکاٹ کیا ۔ کیونکہ پارٹی سربراہ اودھو ٹھاکرے کو مدعو نہیں کیا گیا تھا ۔ اس سے مہاراشٹرا میں برسراقتدار بی جے پی اور شیوسینا کے مابین بڑھتے اختلافات کا اندازہ کیا جاسکتا ہے ۔ شیوسینا کے ایک سینئر لیڈر نے کہا کہ پارٹی کے وزراء کو اس تقریب میں مدعو کیا گیا لیکن بی جے پی نے تنگ نظری کا مظاہرہ کرتے ہوئے ادھو ٹھاکرے کو پروٹوکول کے مطابق دعوت نہیں دی ۔ انہوں نے کہا کہ ہم بی جے پی کے اس طرز عمل کا کیا مطلب سمجھیں ؟

TOPPOPULARRECENT