Saturday , August 19 2017
Home / سیاسیات / ترنمول کانگریس اور بی جے پی میں سیاسی آنکھ مچولی

ترنمول کانگریس اور بی جے پی میں سیاسی آنکھ مچولی

کولکتہ۔/7جنوری، ( سیاست ڈاٹ کام ) یہ الزام عائد کرتے ہوئے کہ سیاست میں حکمران ترنمول کانگریس اور بی جے پی ایک دوسرے کے ساتھ آنکھ مچولی کھیل رہے ہیں، اپوزیشن سی پی ایم نے آج کہا ہے کہ مغربی بنگال میں برسر اقتدار حکومت فرقہ وارانہ واقعات کی روک تھام میں ناکام ہوگئی ہے۔ پارٹی کے ریاستی سکریٹری مسٹر سوریہ کانتا مصرا نے بتایا کہ حالیہ پیش آئے ’ کالی چک ‘ واقعہ سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ غیر ذمہ دارانہ واقعات پر قابو پانے میں ریاستی حکومت یکسر ناکام ہوگئی۔ انہوں نے کہا کہ لیفٹ فرنٹ کے دور حکومت میں مغربی بنگال سیکولرازم کا گہوارہ تھا لیکن اب ترنمول کانگریس کے دورحکومت میں سب کچھ بدل گیا ہے۔ انہوں نے ریاست میں مکمل لاقانونیت حاوی ہوجانے پر سرکاری انتظامیہ کو تنقید کا نشانہ بنایا اور بتایا کہ کالی چک واقعہ سے ریاست میں لاقانونیت اور جنگل راج بے نقاب ہوگیا ہے اور امن و قانون کی مشنری مکمل ناکام ہوگئی ہے اور ریاستی حکومت نے صورتحال پر قابو پانے کیلئے کوئی ٹھوس اقدام نہیں کیا۔ سی پی ایم لیڈر نے الزام عائد کیا کہ پولیس انتظامیہ مذکورہ واقعہ کی پردہ پوشیکیلئے عام لوگوں کو ہراساں کررہا ہے۔ مالڈہ کے علاقہ کالی چک میں ایک بی جے پی لیڈر کے اشتعال انگیز تبصرہ کے بعد اتوار کے دن فرقہ وارانہ تشدد پھوٹ پڑا تھا۔ علاوہ ازیں اپوزیشن لیڈر سوریہ کانتا مصرا نے چیف منسٹر ممتا بنرجی پر الزام عائد کیا ہے کہ وہ ریاست میں بڑی صنعتوں کو لانے میں نااہل ثابت ہوئی ہے اور یہ ادعا کیا کہ مجوزہ گلوبل بزنس سمیٹ کے بعد ریاست سے مزید صنعتیں منتقل کردی جائیں گی۔ انہوں نے بتایا کہ گزشتہ چار سال کے دوران کئی بزنس سمیٹ ( صنعتکاروں کے اجلاس) دیکھے گئے لیکن کوئی ثمر آور نتائج برآمد نہیں ہوئے۔

TOPPOPULARRECENT