Thursday , August 17 2017
Home / سیاسیات / ترنمول کانگریس ایم پی کو موت کی دھمکیاں

ترنمول کانگریس ایم پی کو موت کی دھمکیاں

سیاسی انتقام کا یہ کونسا طریقہ ہے۔ ممتابنرجی کا استفسار
دگھا؍ کولکتہ۔/22ڈسمبر، ( سیاست ڈاٹ کام ) پارلیمنٹ میں ترنمول کانگریس لیڈر سبھا سدیپ بندواپادھیائے نے آج یہ ادعا کیا ہے کہ انہیں قتل کردینے کی دھمکیاں دی جارہی ہیں اور اس خصوص میں پارٹی سربراہ ممتابنرجی کو پیامات موصول ہوئے ہیںچونکہ وہ پارلیمنٹ میں کئی ایک مسائل بشمول عدم تحمل کو اٹھایا ہے، انہیں موت کی دھمکیوں کے ذریعہ باز رکھنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ بندوپادھیائے نے بتایا کہ انہوں نے مرکزی وزیر داخلہ سے یہ درخواست کی ہے کہ اس معاملہ کو سنجیدگی سے لیں اور مناسب انتظامات کریں۔ قبل ازیں چیف منسٹر ممتابنرجی نے ضلع مشرقی مونا پور میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے یہ انکشاف کیا تھا کہ نامعلوم افراد نے سدیپ کو دہلی میں قتل کردینے اور ان کی نعش کولکتہ روانہ کرنے کی دھمکیاں دی ہیں جس سے سیاسی اختلافات پر عدم تحمل ظاہر ہوتا ہے اور میں نے اپنی طویل سیاسی زندگی میں اس طرح کی صورتال کا سامنا نہیں کیا۔ چیف منسٹر نے کہا کہ سیاسی انتقام کا یہ کونسا طریقہ ہے۔ سدیپ دا ( بھائی ) جیسے لیڈر کو پارلیمنٹ میں مسائل اٹھانے پر دھمکیاں دی جارہی ہیں۔ ہر ایک پارٹی کو کسی بھی مسئلہ پر اظہار خیال کی آزادی ہے۔ جمہوریت میں کسی کی آواز کو نہیں دبایا جاسکتا۔ ہر روز عدم تحمل میں اضافہ کے باوجود سیاسی لیڈر، فنکار اور دیگر افراد خاموش ہیں۔ ممتابنرجی نے کہا کہ ان کی زندگی جدوجہد سے عبارت ہے اور موت سے نہیں ڈرتی، لیکن پارٹی لیڈر کو دھمکیاں دینا ناقابل برداشت ہے۔

TOPPOPULARRECENT